جموں و کشمیر میں قیام امن کے لئے بات چیت شروع کرے گی حکومت: راجناتھ سنگھ

Oct 23, 2017 09:44 PM IST | Updated on: Oct 23, 2017 09:44 PM IST

نئی دہلی۔ انٹلی جنس بیورو کے سابق ڈائرکٹر دنیشور شرما کو مرکز نے جموں وکشمیرامور سے مختلف حوالوں سے تعلق رکھنے والوں سے بات چیت کے لئے اپنا نمائندہ مقرر کیا ہے۔ یہ اطلاع آج یہاں وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے دی۔ مسٹر راج ناتھ سنگھ نے ایک پریس کانفرنس میں یہ اعلان کیا اور کہا کہ حکومت نے جموں وکشمیر میں متعلقہ لوگوں کے ساتھ پائیدار بنیاد پر بات چیت کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ یہ پوچھے جانے پر کہ کیا مسٹر شرما جو 1976 کے کیرالہ کیڈر بیچ کے آئی پی ایس افسر ہیں علیحدگی پسندوں سے بھی بات چیت کریں گے، مسٹر راج ناتھ سنگھ نے کہا کہ انہیں کس کس سے بات کرنی ہے یہ فیصلہ خود کرنے کی آزادی ہوگی۔

مسٹر شرما کو کابینہ سکریٹری کی حیثیت حاصل رہے گی۔ وزیر داخلہ نے بتایا کہ کشمیری متعلقین کے ساتھ بات چیت شروع کرنے کی یہ پہل وزیراعظم نریندر مودی کے اس اعلان کے عین مطابق ہے جس میں انہوں نے کہا تھا کہ ریاست کے لوگوں کو گلے لگا کر ہی جموں وکشمیر کے مسائل حل کئے جا سکتے ہیں۔ ایک سوال کے جواب میں مسٹر راج ناتھ سنگھ نے کہا کہ ایک سے زیادہ لوگوں سے بات چیت کرنے کے بعد مسٹر شرما ریاستی حکومت کو بتائیں گے کہ کیا باتیں ہوئیں۔ واضح رہے کہ قبل ازیں مرکزی وزیر داخلہ ایک کل جماعتی وفد کے ساتھ وادی کشمیر گئے تھے۔ اس سے پہلے تشدد کی ایک لمبی لہر چلی تھی ۔ حزب المجاہدین ’کمانڈر ‘ برہان وانی ایک انکاؤنٹر میں مارا گیا تھا۔

جموں و کشمیر میں قیام امن کے لئے بات چیت شروع کرے گی حکومت: راجناتھ سنگھ

نیم فوجی اہلکار نگرانی کرتے ہوئے جبکہ کشمیری لڑکیاں ان کے سامنے سے تیرہ ستمبر دو ہزار سترہ کو سری نگر کے ایک مارکیٹ کی طرف جاتی ہوئیں۔ فوٹو، اے پی، مختار خان۔

سابقہ یو پی اے حکومت نے بھی 2010 میں اس طرح کی کوشش کی تھی اور صحافی دلیپ پڈ گاؤنکر ، پروفیسر ایم ایم انصاری، دلی پولس گروپ کی ٹرسٹی رادھا کمار کی خدمات حاصل کی تھیں۔ وزیرداخلہ نے بتایا کہ مسٹر شرما کے لئے یہ کام مکمل کرنے کے لئے کوئی وقت مقرر نہیں کیا گیا ہے۔ وہ بات چیت کے دوران جموں وکشمیر کے عوام کے امنگوں اور خواہشات کو سمجھنے کی کوشش کریں گے۔ حکومت کا ذہن صاف ہے اور وادی میں حالات کو معمول پر لانا مقصود ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز