اجودھیا میں رام مندر کے مسئلہ پر اکھاڑا پریشد اور وشو ہندو پریشد آمنے سامنے

Jan 25, 2017 09:02 PM IST | Updated on: Jan 25, 2017 09:02 PM IST

الہ آباد ۔ وشو ہندو پریشد کی مارگ درشک منڈل کی میٹنگ میں رام مندر کے ایشو پر وی ایچ پی اور اکھاڑا پریشد کے اختلا فات کھل کر سامنے آ گئے ہیں ۔ اکھاڑا پریشد نے یو پی چناؤ میں رام مندر مسئلے کو اٹھانے کی وی ایچ پی کی کوشش کی شدید مخالفت کی ہے ۔ اس کی دلیل ہے کہ رام مندر کے معاملے کو سیاست سے دور رکھا جائے اورعدالت کے فیصلے کا انتظار کیا جائے۔ الہ آباد میں جاری وی ایچ پی مارگ درشک منڈل کی میٹنگ میں جہاں ایک طرف وی ایچ پی نے رام مندر مسئلے کو  یو پی چناؤ میں لے جانے کا فیصلہ کیا ہے وہیں دوسری طرف اکھاڑا پریشد نے رام مندر کے معاملے میں سپریم کورٹ کےفیصلےکو قبول کرنے کا اعلان کیا ہے ۔

الہ آباد  کے ماگھ میلے میں منعقد ہونے والی وشو ہندو ریشد کی مارگ درشک منڈل میٹنگ  میں آر ایس ایس سے جڑے تمام سادھو سنتوں نے شرکت کی ۔ اس میٹنگ میں یو پی میں ہونے والے چناؤ اور ایودھیا میں رام مندر کی تعمیر کے مسئلے پر غور وخوض کیا گیا۔ میٹنگ میں فیصلہ کیا گیا کہ ایودھیا میں رام مندر کی تعمیر کے لئے مرکزی حکومت پر دباؤ بنایا جائے اور رام مندر کی تحریک سے عوام  کو جوڑا جائے ۔  لیکن مارگ درشک منڈل کی میٹنگ میں شامل اکھاڑا پریشد کے سادھو سنتو ں نے وی وی ایچ پی  کے اس فیصلے کی شدید مخالفت کی ہے ۔ میٹنگ میں شامل اکھاڑا پریشد کے صدر مہنت نرندر گری نے کہا کہ رام مندر کا معاملہ سپریم کورٹ  میں زیر سماعت  ہے ۔ لہٰذا اکھاڑا پریشد عدالت کے فیصلے کو ہی قبول کرے گا۔

اجودھیا میں رام مندر کے مسئلہ پر اکھاڑا پریشد اور وشو ہندو پریشد آمنے سامنے

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز