ملک بھر کی یونیورسٹیوں کی رینکنگ جاری، جانیں کون ہے ہندوستان کی نمبر ون یونیورسیٹی

Apr 03, 2017 07:30 PM IST | Updated on: Apr 03, 2017 07:30 PM IST

نئی دہلی۔  انڈین انسٹی ٹیوٹ آف سائنس بنگلورو نے ملک میں اعلی تعلیمی اداروں کی اس سال تمام درجہ بندی میں ایک بار پھر سرفہرست رہتے ہوئے پہلا مقام حاصل کیا ہے جبکہ آئی آئی ٹی مدراس دوسرے اور آئی آئی ٹی ممبئی تیسرے مقام پر ہے۔ درجہ بندی میں اے ایم یو 19 ویں اور جامعہ ملیہ اسلامیہ 20 ویں جبکہ جے این یو چھٹے اور ڈی یو پندرہویں نمبر پر ہے۔ مرکزی حکومت نے نیشنل انسٹی ٹیوشنل فریم ورک کی جانب سے تیار کی گئی درجہ بندی 2017 جاری کر دی ہے۔ اس درجہ بندی کو فروغ انسانی وسائل کے مرکزی وزیر پرکاش جاوڈیکر نے آج یہاں جاری کیا۔

گزشتہ سال متعدد تنازعات میں گھرے جواہر لال نہرو یونیورسٹی چھٹے نمبر پر، بنارس ہندو

ملک بھر کی یونیورسٹیوں کی رینکنگ جاری، جانیں کون ہے ہندوستان کی نمبر ون یونیورسیٹی

یونیورسٹی دسویں، دہلی یونیورسٹی پندرہویں، علی گڑھ مسلم یونیورسٹی 19 ویں اور جامعہ ملیہ اسلامیہ 20 ویں نمبر پر ہے۔ ملک کی بہترین یونیورسٹیوں کی درجہ بندی میں بھی انڈین انسٹی ٹیوٹ آف سائنس بنگلور پہلے نمبر پر ہے جبکہ جے این یو اس زمرے میں دوسرے اور بی ایچ یو تیسرے مقام پر ہے۔ دہلی یونیورسٹی آٹھویں، علی گڑھ مسلم یونیورسٹی 11 ویں اور جامعہ ملیہ اسلامیہ 12 ویں نمبر پر ہے۔ اس سال سے كالجوں کی رینکنگ بھی شروع ہوئی ہے جس میں دہلی یونیورسٹی کا مرانڈا ہاؤس کالج ملک میں پہلے نمبر پر ہے۔ لوئلا کالج چنئی دوسرے مقام پر اور ڈی یو کا شری رام کالج آف کامرس تیسرے مقام پر ہے۔ رینکنگ مقابلے میں دہلی یونیورسٹی کا مشہور سینٹ اسٹیفن کالج، ہندو کالج اور دہلی اسکول آف اكانومكس نے حصہ نہیں لیا تھا۔

اس درجہ بندی مقابلے میں 3319 اداروں نے حصہ لیا تھا۔نیشنل انسٹی ٹیوشنل فریم ورک گزشتہ سال شروع کیا گیا تھا۔ اس سال کی درجہ بندی کی دو اور زمرے شروع کئے گئے ہیں جن میں ایک كالجوں کی رینکنگ بھی ہے، گزشتہ سال چار اقسام کی درجہ بندی کی گئی تھی۔تمام درجہ بندیوں جس میں یونیورسٹیوں کی درجہ بندی، انجینئرنگ كالجوں اور ڈگری كالجوں میں 100 بہترین اداروں کی فہرست جاری کی گئی جبکہ مینجمنٹ اور فارمیسی میں 50-50 اداروں کی فہرست جاری کی گئی ہے۔ مسٹر جاوڈیکر نے بتایا کہ تمام اداروں کی درجہ بندی کی مکمل فہرست ایک کتاب کے طور پر شائع کی جائے گی جو صدر پرنب مکھرجی 10 اپریل کو جاری کریں گے۔ اسی روز مسٹر مکھرجی کی جانب سے بہترین اداروں کو انعامات سے بھی نوازا جائے گا۔ انجینئرنگ كالجوں کی فہرست میں شروع کے سات مقامات پر آئی آئی ٹی کے انسٹی ٹیوٹ ہیں جن میں آئی آئی ٹی مدراس پہلے، آئی آئی ٹی ممبئی دوسرے اور آئی آئی ٹی كھڑگ پور تیسرے، آئی آئی ٹی دہلی چوتھے، آئی آئی ٹی کانپور پانچویں، آئی آئی ٹی روڑكي چھٹے اور آئی آئی ٹی گوہاٹی ساتویں نمبر پر ہے۔

مینجمنٹ اداروں کی فہرست میں شروع کے پانچ اداروں میں انڈین انسٹی ٹیوٹ آف مینجمنٹ (آئی آئی ایم) کے ہیں۔ انڈین انسٹی ٹیوٹ آف مینجمنٹ احمد آباد پہلے، آئی آئی ایم بنگلور دوسرے مقام پر اور آئی آئی ایم كولكا تہ تیسرے مقام پر ہے۔ فارمیسی اداروں میں دہلی میں واقع جامعہ ہمدرد پہلے نمبر پر ہے جبکہ موہالی واقع نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف فارماسیوٹیکل ایجوکیشن اینڈ ریسرچ دوسرے اور چنڈی گڑھ واقع یونیورسٹی انسٹی ٹیوٹ آف فارماسوٹیکل سائنس تیسرے مقام پر ہے۔ رینکنگ مقابلے میں انجینئرنگ کے 1007اداروں، مینجمنٹ کے 542 اداروں ، فارمیسی کے 316 اداروں کے علاوہ 535 ڈگری کالجوں نے بھی حصہ لیا تھا۔ اس مرتبہ رینکنگ کے تعین کے لئے اداروں سے فارغ ہونے والے طلبہ کو ملے روزگار کے علاوہ ان اداروں کے تعلق سے عام لوگوں میں بنی شبیہ اور صنفی مساوات کو بھی ذہن میں رکھا گیا تھا۔ اس موقع پرفروغ انسانی وسائل کے وزیر مملکت ڈاکٹر مہندر ناتھ پانڈے کے علاوہ اعلی تعلیم کے سکریٹری کے کے شرما، یونیورسٹی گرانٹ کمیشن کے سبکدوش ہونے والے پروفیسر وید پرکاش اور نیشنل بورڈ آف ایکریڈیشن کے پروفیسر سریندر پرساد بھی موجود تھے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز