جی ڈی پی کو لے کر سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ کی 9 ماہ پہلے کی گئی پیشین گوئی ہوئی سچ ثابت

Sep 01, 2017 09:19 PM IST | Updated on: Sep 01, 2017 09:19 PM IST

نئی دہلی: رواں مالی سال کی پہلی سہ ماہی کے مجموعی گھریلو پیداوار (جی ڈی پی) کے اعداد وشمار سے سابق وزیر اعظم من موہن سنگھ کی نوٹ بندی سے جی ڈی پی میں دو فیصد تک گراوٹ کا اندازہ درست ثابت ہوتا دکھائی دے رہا ہے۔ حکومت کی طرف سے کل جاری اعدادو شمار کے مطابق اپریل ۔ جون 2017 کی سہ ماہی میں جی ڈی پی کی شرح گذشتہ سال اسی مدت کی 7.9 کے مقابلے میں دو فیصد سے زیادہ گر کر 5.7 رہ گئی جو پچھلے تین سال میں سب سے کم سطح پر ہے۔ سال 2016-17 کی آخری سہ ماہی میں یہ 7.1 فیصد رہی تھی۔

وزیر اعظم نریندر مودی نے گذشتہ سال آٹھ نومبر کو پانچ سو اور ایک ہزار روپے کے نوٹوں کے چلن کو بند کرنے کا اعلان کیا تھا۔ اس کے بدع پانچ سو روپے کا نیا نوٹ لایا گیا اور دو ہزار روپے نوٹ پہلی مرتبہ چلن میں آیا۔ نوٹ بندی کے بعد ڈاکٹر سنگھ نے راجیہ سبھا میں تقریر میں اپنے اندازہ کے مطابق خدشہ ظاہر کیا تھا کہ اس فیصلے سے جی ڈی پی پر دو فیصدتک کا اثر پڑ سکتا ہے۔ سنٹرل اسٹاٹسٹیکل آفس سے کل جاری اعدادو شمار کے مدنظر سابق وزیر اعظم کا خدشہ درست ثابت ہورہا ہے۔

جی ڈی پی کو لے کر سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ کی 9 ماہ پہلے کی گئی پیشین گوئی ہوئی سچ ثابت

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز