کتنے کھاتوں میں جمع ہوئے 2.5 لاکھ روپئے سے زیادہ، اس کی معلومات نہیں: ریزرو بینک

Feb 21, 2017 09:47 PM IST | Updated on: Feb 21, 2017 09:47 PM IST

نئی دہلی۔ نوٹ بندی کے بعد سے ملک میں کتنے بینک کھاتوں میں ڈھائی لاکھ روپے سے زیادہ کی رقم 500 اور 1000 روپے کے نوٹ کے طور پر جمع کی گئی ہے، اس بات سے آر بی آئی انجان ہے۔ ایک آر ٹی آئی کے جواب میں بھارتی ریزرو بینک نے کہا ہے کہ 8 نومبر سے 30 دسمبر تک ملک کے کتنے بینک کھاتوں میں 2.5 لاکھ روپے سے زیادہ کی رقم بند نوٹوں کے طور پر جمع ہوئی، اس کی اسے معلومات نہیں ہے۔

مدھیہ پردیش کے نیمچ رہائشی سماجی کارکن چندر شیکھر گوڑ نے بتایا کہ ریزرو بینک کے کرنسی بندوبست محکمہ (کرنسی مینجمنٹ ڈپارٹمنٹ) کی جانب سے ان کی آر ٹی آئی عرضی پر 17 فروری کو اس کا جواب دیا گیا۔ گوڑ نے ریزرو بینک سے پوچھا تھا کہ آٹھ نومبر سے 30 دسمبر 2016 کے درمیان ملک کے الگ الگ بینکوں کے کل کتنے کھاتوں میں 2.50 لاکھ روپے سے زیادہ قیمت کے بند کئے گئے نوٹ جمع ہوئے ہیں۔

کتنے کھاتوں میں جمع ہوئے 2.5 لاکھ روپئے سے زیادہ، اس کی معلومات نہیں: ریزرو بینک

سماجی کارکن نے بتایا کہ انہوں نے آر ٹی آئی کے تحت ریزرو بینک سے یہ بھی جاننا چاہا تھا کہ اس مدت میں مختلف کوآپریٹیو بینکوں کے کل کتنے کھاتوں میں 2.5 لاکھ سے زیادہ کی رقم 500 اور 1 ہزار روپے کے بند نوٹوں کے طور پر جمع ہوئی۔ گوڑ نے کہا کہ میری آر ٹی آئی عرضی پر اس سوال کا بھی یہی جواب دیا گیا کہ مانگی گئی معلومات ریزرو بینک کے پاس دستیاب نہیں ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز