Live Results Assembly Elections 2018

سمجھوتہ ایکسپریس دھماکہ کے معاملہ میں راجیہ سبھا میں بی جے پی اور کانگریس کی ایک دوسرے پر الزام تراشی

سمجھوتہ ایکسپریس دھماکہ معاملے میں آج راجیہ سبھا میں بھارتیہ جنتا پارٹی اور کانگریس کے ارکان نے ایک دوسرے پر الزامات لگائے۔

Jul 27, 2017 04:33 PM IST | Updated on: Jul 27, 2017 04:33 PM IST

نئی دہلی: سمجھوتہ ایکسپریس دھماکہ معاملے میں آج راجیہ سبھا میں بھارتیہ جنتا پارٹی اور کانگریس کے ارکان نے ایک دوسرے پر الزامات لگائے۔ بی جے پی کے شیو پرتاپ شکلا نے وقفہ صفر کے دوران اس معاملے کو اٹھاتے ہوئے کہا کہ سمجھوتہ ایکسپریس دھماکہ کیس میں پاکستان ملوث رہا ہے، لیکن اس وقت حکومت نے اسے دبانے کی کوشش کی۔ انہوں نے کہا کہ لشکر طیبہ اور سیمی نے اس دھماکے کو انجام دیا تھا۔ انہوں نے ترقی پسند اتحاد (یو پی اے) حکومت پر ملک کے ساتھ غداری کرنے کا الزام لگایا۔

اس کے جواب میں کانگریس کے دگ وجے سنگھ نے کہا کہ اس مسئلے کو اٹھا کر دھماکہ کے ملزمان کو مہلت دینے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ بی جے پی کے سبرامنیم سوامی نے کہا کہ سمجھوتہ ایکسپریس دھماکہ دہشت گردانہ حملہ تھا جو نارکو ٹیسٹ سے ثابت ہوا ہے۔ اس کے بعد کانگریس کے اراکین شور وغل کرنے لگے۔

سمجھوتہ ایکسپریس دھماکہ کے معاملہ میں راجیہ سبھا میں بی جے پی اور کانگریس کی ایک دوسرے پر الزام تراشی

file photo

بی جے پی کے ایل گنیشنن نے الزام لگایا کہ سمجھوتہ ایکسپریس دھماکہ سیمی نے کیا تھا۔ اسی دوران مسٹر دگ وجے سنگھ نے کہا کہ نارکو ٹیسٹ کے تعلق سے جو ویڈیو ہے وہ جعلی ہے۔ کانگریس کے ہی آنند شرما نے قانون کا سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ جو معاملہ عدالت میں زیر غور ہے اس پر ایوان میں بحث نہیں کی جا سکتی ہے۔ ڈپٹی چیئرمین پی جے کورین نے کہا کہ کون سا معاملہ عدالت میں زیر التوا ہے اس کا پتہ لگانا ایوان کے دفتر کے لئے ممکن نہیں ہے۔ اس کے بعد اراکین خاموش ہو گئے۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز