یوپی کے لڑکوں کا آگرہ میں روڈ شو، اکھلیش کے ساتھ راہل بولے بی ایس پی لڑائی میں ہی نہیں

Feb 03, 2017 08:43 PM IST | Updated on: Feb 03, 2017 08:43 PM IST

آگرہ۔ دارالحکومت لکھنؤ میں کامیاب روڈ شو کے بعد وزیر اعلی اکھلیش یادو اور کانگریس نائب صدر راہل گاندھی نے جمعہ کو آگرہ میں مشترکہ روڈ شو کیا۔ تقریبا چار گھنٹے تک آگرہ میں روڈ شو کرنے کے بعد دونوں رہنماؤں نے لوگوں سے خطاب بھی کیا۔ وزیر اعلی اکھلیش یادو نے پہلے مائیک سنبھالتے ہوئے لوگوں سے کہا کہ سائیکل پر اب ہاتھ بھی لگ گیا ہے۔ اس لئے ترقی کی رفتار اب دوگنی ہو جائے گی۔ کانگریس سے اتحاد پر کہا کہ ہم دونوں مل کر ریاست میں خوشحالی لے کر آئیں گے۔ اکھلیش کے بعد راہل گاندھی نے لوگوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم دونوں مل کر اتر پردیش کو بدل دیں گے۔

راہل نے پی ایم مودی پر نشانہ لگاتے ہوئے کہا کہ جہاں بھی نریندر مودی اور بی جے پی کے لوگ جاتے ہیں، وہاں نفرت پھیلاتے ہیں۔ کانگریس لوگوں کو جوڑتی ہے۔ ہر مذہب کے لوگوں کو ساتھ لے کر چلتی ہے۔ ہم بی جے پی اور آر ایس ایس کے لوگوں کو یوپی سے نکال دیں گے۔ بی ایس پی پر راہل نے کہا کہ میں ان پر کچھ نہیں کہوں گا کیونکہ وہ لڑائی میں ہی نہیں ہیں۔ فرقہ واریت کے خلاف جنگ کے لئے ہم نے ایس پی کے ساتھ اتحاد کیا۔ نوٹ بندی پر راہل نے کہا کہ مودی جی نے پورے ملک کو لائن میں لگا دیا۔ انہوں نے غریبوں اور مزدوروں کے لئے کچھ نہیں کیا۔ مودی جی نے 15 لاکھ دینے کا وعدہ کیا تھا۔ کیا کسی کی جیب میں 15 لاکھ روپے آئے؟

یوپی کے لڑکوں کا آگرہ میں روڈ شو، اکھلیش کے ساتھ راہل بولے بی ایس پی لڑائی میں ہی نہیں

اس سے پہلے روڈ شو کے دوران اکھلیش اور راہل کی ایک جھلک دیکھنے کے لئے لوگ گھروں کی چھتوں پر ٹکٹکی لگا کر بیٹھے نظر آئے۔ قافلہ جہاں سے ہوکر گزر رہا ہے، دونوں پر پھولوں کی بارش کی جا رہی ہے۔ بتا دیں کہ آگرہ میں فیز -1 میں 11 فروری کو ووٹنگ ہونی ہے۔

roadshow

راہل-اکھلیش دونوں وجے بس کی چھت پر سوار ہیں۔ بس کی چھت پر ہی ایس پی جی کے جوان بھی موجود ہیں۔ انتخابی پالیسی ساز پرشانت کشور کی ٹیم نے ہی اس روڈ شو کا بھی روڈ میپ تیار کیا ہے۔ وہیں دونوں کے اس روڈ شو میں بھاری بھیڑ بھی جٹی ہے۔

کانپور میں ہوگا مشترکہ جلسہ عام

راہل گاندھی اور اکھلیش یادو 5 فروری کو کانپور میں مشترکہ روڈ شو کر جلسے عام  سے خطاب کر سکتے ہیں۔ اس دوران دونوں ہی لیڈر کم از کم مشترکہ پروگرام بھی جاری کر سکتے ہیں۔ اتحاد کی حکومت بننے پر اسی مشترکہ پروگرام کے مطابق منصوبے نافذ کئے جائیں گے۔ بتایا جا رہا ہے کہ راہل گاندھی اپنے کسان یاترا کے دوران کئے گئے وعدوں کو اس میں شامل کر سکتے ہیں۔ کسانوں کا قرض معاف، بجلی بل ہاف سمیت کئی وعدوں کو کم از کم مشترکہ پروگرام میں جگہ مل سکتی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز