اترپردیش : سہارنپور سے مجبور روہنگیا مسلم پناہ گزینوں کو باہر نکالاجائے گا ، 50 سے زائد کنبے ہیں آباد

Sep 07, 2017 11:33 PM IST | Updated on: Sep 07, 2017 11:33 PM IST

سہارنپور: اترپردیش میں سہارنپور ضلع کے مختلف حصوں میں کافی وقت سے پناہ لئے ہوئے میانمار کے 50 سے زائد روہنگیا مسلم خاندانوں کو ملک سے باہر کیا جائے گا۔ سینئر پولیس سپرنٹنڈنٹ (ایس ایس پی) ببلو کمار نے آج یہاں بتایا کہ ضلع میں تقریبا 50 روہنگیا مسلم خاندانوں کے رہنے کی اطلاع ملی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ ایل آئی یو کے ڈپٹی پولیس سپرنٹنڈنٹ دھن پرکاش تیاگی کے مطابق ضلع کے قصبہ گنگوہ کے ایک بوچڑخانے (كمیلا) میں15 روہنگیا مسلم خاندان رہتے ہیں اور محنت مزدوری کرتے ہیں۔ گزشتہ 25 جولائی کو ان مسلمانوں کا وہاں رہنے والے بنگالی مسلمانوں کے ساتھ لڑائی ہوگئی ۔ اس کے بعد روہنگیامسلمانوں کی شناخت سامنے آئی۔

اترپردیش : سہارنپور سے مجبور روہنگیا مسلم پناہ گزینوں کو باہر نکالاجائے گا ، 50 سے زائد کنبے ہیں آباد

روہنگیا کے مسلمان : فائل فوٹو ، رائٹر

مسٹر کمار نے بتایا کہ خفیہ محکمہ کی خصوصی شاخ کے انسپکٹر آر کے راوت کے مطابق تحقیقات میں سامنے آیا ہے کہ سہارنپور میں سلاٹر ہاؤس، دیوبند اور گاگل هیڑي کے مسلم اکثریتی علاقوں میں ان پناہ گزینوں کے چھپ کر رہنے کی اطلاع ملی ہے۔ اطلاع کے مطابق گنگوہ میں رہ رہے روہنگیا پناہ گزینوں میں عزیزالحق ، عبدالکلام، نور الحق، شمس الاسلام اور حسن اسلام کے پاس يو این او کا پناہ گزین سرٹیفکیٹ ملی ہے اور اس طرح کے دیگر کچھ لوگوں نے اس کے لئے درخواست دی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ دیوبند میں ان پناہ گزینوں کی حمایت میں مسلم ویلفیئر ایسوسی ایشن کی جانب سے وزیر اعظم کے نام میمورنڈم ڈی ایس پی سدھارتھ سنگھ کو دیا گیا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز