ہریانہ : سینٹرل یونیورسٹی کے نصاب میں شامل ہوئے آر ایس ایس آئیکن ساورکر اور گولوالکر

Aug 03, 2017 11:16 PM IST | Updated on: Aug 03, 2017 11:24 PM IST

چنڈی گڑھ : ہریانہ کے سینٹرل یونیورسٹی کے نصاب میں جلد ہی راشٹریہ سویم سیوک سنگھ (آر ایس ایس) کے مفکر ایم ایس گولوالکر، دین دیال اپادھیائے اور وی ڈی ساورکر کے باب کو شامل کیا جائے گا ۔ بتایا جارہا ہے کہ اس کے ذریعہ طالب علموں میں قوم پرستی کا جذبہ پیدا کرنے کی کوشش کی جائے گی ۔ یونیورسٹی کی جانب سے جمعرات کو یہ معلومات دی گئی۔ مرکز کی جانب سے فنڈیڈیونیورسٹی نے کہا کہ اس نے سوامی وویکانند، رابندر ناتھ ٹیگور، دیانند سرسوتی، رام منوہر لوہیا، جے پرکاش نارائن اور آچاریہ نریندر دیو کو بھی سیاسیات کے گریجویشن کورس میں شامل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

یونیورسٹی کی جانب سے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ یہ فیصلہ طالب علموں کے درمیان اعلی سطح کے اخلاقی معیار اور قوم پرستی کا جذبہ پیدا کرنے کے لئے لیا گیا ہے۔ یونیورسٹی کی جانب سے اس بات پر زور دیا گیا کہ ان شخصیات نے ملک کی تعمیر اور قوم پرستی کے تصور کو سامنے لانے میں منفرد اور اہم کردار ادا کیاہے۔

ہریانہ : سینٹرل یونیورسٹی کے نصاب میں شامل ہوئے آر ایس ایس آئیکن ساورکر اور گولوالکر

یونیورسٹی کے فیصلہ پر وائس چانسلر کا کہنا ہے کہ نصاب میں یہ تبدیلی ایک نئی شروعات ہے، جو پولیٹیکل سائنس کے طالب علموں کو ان اہم سیاسی مفکرین کے نقطہ نظر اور نقطہ نظر کی مدد سے موضوعات کو سمجھنے میں مدد ملے گی۔ یونیورسٹی نے یہ بھی کہا کہ ان قوم پرستوں کی تعلیم پولیٹیکل سائنس میں ماسٹرز کے دوسرے سال کے طالب علموں کو ان کے تیسرے اور آخری سمسٹر میں دی جائیں گی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز