سہارنپور تشدد کو لے کر یوگی حکومت کے رویہ سے بی جے پی اعلی قیادت ناراض ، ٹھوس قدم اٹھانے کی ہدایت

Jun 02, 2017 12:34 PM IST | Updated on: Jun 02, 2017 12:34 PM IST

سہارنپور : بھارتیہ جنتا پارٹی کی اعلی قیادت اتر پردیش کے سہارنپور میں نسلی تشدد کے بعد یوگی آدتیہ ناتھ حکومت کی دلت مخالف تصویر بننے کا خدشہ سے فکر مند ہے۔ دی ٹیلیگراف کی ایک رپورٹ کے مطابق بی جے پی اعلی کمان نے وزیر اعلی آدتیہ ناتھ کو ہدایت دی ہے کہ اگر وہ پارٹی کی شبیہ کو بچانے کے لئے مناسب قدم نہیں اٹھاتے ہیں تو ان کے خلاف سخت فیصلہ کیا جا سکتا ہے۔

سہارنپور کے شبيرپور گاؤں میں پانچ مئی کو دلتوں اور ٹھاکروں کے درمیان تشدد کی شروعات ہوئی تھی ، جس میں ایک ٹھاکر کی موت ہو گئی تھی اور دلتوں کے تقریبا دو درجن گھر جلا دیے گئے تھے۔ اس کے بعد سے ایک ماہ میں تشدد کے کئی واقعات ہوچکے ہیں۔ دلتوں کا کہنا ہے کہ یوگی آدتیہ ناتھ ٹھاکروں کو بچا رہے ہیں کہ کیونکہ وہ بھی ٹھاکر ہیں۔

سہارنپور تشدد کو لے کر یوگی حکومت کے رویہ سے بی جے پی اعلی قیادت ناراض ، ٹھوس قدم اٹھانے کی ہدایت

ٹیلیگراف کی رپورٹ کے مطابق بی جے پی اعلی کمان کو لگ رہا ہے کہ یوگی حکومت نے سہارنپور تشدد کے معاملہ سے صحیح طریقہ سے نہیں نمٹ سکی اور دونوں فرقوں کے درمیان تشدد بڑھتا چلاگیا ۔ بی جے پی اعلی کمان کو لگ رہا ہے کہ اس کی وجہ یوگی آدتیہ ناتھ کے پاس انتظامی امور کے تجربہ کی کمی ہے۔ بی جے پی کے ایک ذرائع نے ٹیلیگراف کو بتایا کہ وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ کو اعلی کمان نے کہہ دیا ہے کہ یہ تشدد دیگر اضلاع میں نہیں پھیلنی چاہئے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز