خاتون کارکن نے سنجے سنگھ کو روڈ شو میں مارا تھپڑ، ٹکٹ کے بدلے پیسے مانگنے کا الزام

Apr 02, 2017 06:36 PM IST | Updated on: Apr 02, 2017 06:36 PM IST

نئی دہلی۔ دہلی میں ایم سی ڈی انتخابات قریب آتے ہی عام آدمی پارٹی کے اندر ٹکٹوں کی تقسیم پر اختلاف شروع ہو گیا ہے۔ اتوار کو تلک نگر کی رہنے والی سمرن بیدی نام کی ایک خاتون کارکن نے عام آدمی پارٹی کے لیڈر سنجے سنگھ کو سرعام تھپڑ جڑ دیا۔ یہ واقعہ اس وقت کا ہے جب سنجے سنگھ علاقے میں روڈ شو کر رہے تھے۔ ملزم خاتون کارکن نے پارٹی لیڈر اور ضلع صدر پرتپال سنگھ کالرا، سنجے سنگھ اور ممبر اسمبلی جرنیل سنگھ پر ٹکٹ کے بدلے پیسے مانگنے کا الزام لگایا ہے۔ سمرن بیدی کا الزام ہے کہ اس کے شوہر نے اروند کیجریوال کے سامنے پارٹی رہنماؤں سے بات چیت کی آڈیو کلپ بھی سامنے پیش کی۔ خاتون کا الزام ہے کہ بغیر تحقیقات کے ہی کیجریوال نے آڈیو کلپ کو فرضی قرار دے دیا، جس سے دلبرداشتہ ہوکر اسے (خاتون کارکن کو) یہ قدم اٹھانا پڑا۔

تھپڑ مارنے کے واقعہ کے بعد ہنگامہ ہوا اور سنجے سنگھ کو روڈ شو منسوخ کرنا پڑا۔ سمرن نے بتایا کہ وہ کئی سال سے پارٹی سے وابستہ ہیں۔ ان کا الزام ہے کہ انہوں نے دہلی، پنجاب، گوا کے علاوہ کافی جگہ اپنے شوہر کے ساتھ پارٹی کے لئے خوب محنت کی۔ لیکن، جب تلک نگر سے ایم سی ڈی انتخابات کے لئے ٹکٹ مانگا تو ان سے پیسے مانگے گئے اور سنجے سنگھ سمیت پارٹی کے بڑے لیڈروں نے ملنے سے بھی انکار کر دیا۔

خاتون کارکن نے سنجے سنگھ کو روڈ شو میں مارا تھپڑ، ٹکٹ کے بدلے پیسے مانگنے کا الزام

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز