حق اطلاعات ایکٹ کو نوجوان نسل کے قریب لے جانے کی ضرورت : وجاہت حبیب اللہ

علی گڑھ ۔ حق اطلاعات ایکٹ کو نوجوان نسل کے قریب لے جانے کی ضرورت ہے اس لئے اس کو نصاب میں شامل کیا جانا چاہیے۔

Feb 08, 2017 07:26 PM IST | Updated on: Feb 08, 2017 07:26 PM IST

علی گڑھ ۔ حق اطلاعات ایکٹ کو نوجوان نسل کے قریب لے جانے کی ضرورت ہے اس لئے اس کو نصاب میں شامل کیا جانا چاہیے۔ ابھی تک طلبہ برادری نے اس میں وہ دلچسپی نہیں دکھائی ہے جو ان کو دکھانی چاہیے۔  یہ کہنا ہے حکومت ہند کےسابق انفارمیشن کمشنر وجاہت حبیب اللہ کا۔ علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے کینڈی ہال میں ’حق اطلاعات ایکٹ کی ترویج و اہمیت ‘ کے موضوع پر خصوصی لیکچر دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس ایکٹ کی واقفیت سے ملک کا مستقبل سنورے گا۔

علی گڑھ مسلم یونیورسٹی طلباء یونین کی جانب سے منعقدہ اس خصوصی لیکچر میں جہاں ملک کے سابق انفارمیشن کمشنر وجاہت حبیب اللہ موجود تھے وہیں معروف آر ٹی آئی ایکٹوسٹ گنیش بھی موجود تھے۔ ورلڈ آف ریکارڈ بناچکے سبھاش چند ر اگروال نے بھی آرٹی آئی کی اہمیت و افادیت پر زور دیتے ہوئے  کہا کہ حکومتوں کی ذمہ داری ہے کہ وہ اس ایکٹ کو زیادہ سے زیادہ عوام بالخصوص نوجوانوں تک پہنچائیں۔ اسی لیے ہمارا مطالبہ ہے کہ اس کو اسکولی نصاب میں شامل کیا جائے۔ وہیں انھوں نے آرٹی آئی پر کوئی ناٹک ڈرامہ وغیرہ بنانے کی بھی تجویز پیش کی۔ علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے معروف اولڈ بوائے و آئی ٹی آئی اسپیشلسٹ عبدالحفیظ گاندھی نے بھی حق اطلاعت ایکٹ کی اہمیت بتائی اور مطالبہ کیا کہ یونیورسٹی میں اس موضوع پر ایک کورس شروع ہونا چاہیے جس سے ملک کا جمہوری نظام اور مضبوط ہو۔

حق اطلاعات ایکٹ کو نوجوان نسل کے قریب لے جانے کی ضرورت : وجاہت حبیب اللہ

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز