غزل کےعظیم شاعر اخترمسلمی پر قومی سیمینار 9 فروری کو جامعہ ملیہ اسلامیہ میں

Feb 07, 2017 07:07 PM IST | Updated on: Feb 07, 2017 07:08 PM IST

نئی دہلی۔  ترقی پسند ادب کے عروج کے زمانہ میں غزل کو اردو شاعری کی آبرو سمجھ کر اسکے گیسو سنوارنے والے شاعر اخترمسلمی کے فن سے ایک بڑے ادبی حلقہ کو روشناس کرانے کی غرض سے یہاں ان کے فن اور شخصیت کے موضوع پر ایک قومی سیمینار کا اہتمام کیا گیا ہے۔ پروگرام جامعہ ملیہ اسلامیہ کے سی آئی ٹی ہال میں ہوگا۔ یہ قومی سیمینار انجمن طلبہ قدیم مدرستہ الاصلاح، دہلی یونٹ،قومی کونسل برائے فروغ اردو زبان(این سی پی یو ایل)،دہلی کے اشتراک سے 9 فروری2017کومنعقد ہو رہا ہے۔ جامعہ ملیہ اسلامیہ کے وائس چانسلر پروفیسر طلعت احمد اس سیمینار میں مہمان خصوصی ہوں گے جبکہ شبلی اکیڈمی ،اعظم گڑھ کے ڈائریکٹر پروفیسر اشتیاق احمد ظلی پروگرام کی صدارت کریں گے۔کلیدی خطبہ پروفیسر الطاف احمد اعظمی کا ہوگا۔

اخترمسلمی کا تعلق مردم خیز سرزمین اعظم گڑھ سے ہے۔ وہ 1928میں پیدا ہوئے۔اختر مسلمی اعظم گڑھ کی ایک عظیم شخصیت کا نام ہے جسے کبھی فراموش نہیں کیا جاسکتا۔غزل ان کی محبوب ترین صنف سخن تھی۔ انکا قابل قدر سرمایہ شاعری اسی صنف میں موجود ہے۔ان کی زندگی میں ہی دو مجموعے شائع ہوئے، اول ’’موج نسیم‘‘ 1961میں دوم ’’موج صبا‘‘ 1981میں۔ اب کلیات اخترمسلمی کے نام سے پورا کلام شائع ہوچکا ہے ۔ قومی راجدھانی دہلی اور ملک کی مختلف یونیورسٹیوں،اداروں اور شہروں سے اہل علم حضرات اور ادباء اس سیمینار میں شرکت کررہے ہیں۔

غزل کےعظیم شاعر اخترمسلمی پر قومی سیمینار 9 فروری کو جامعہ ملیہ اسلامیہ میں

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز