علاحدگی پسندوں کو کشمیر کے حالات بگاڑنے کیلئے ملتے ہیں پیسے : اسپیشل ڈی جی سی آر پی ایف

جموں وکشمیر کے سپیشل ڈائریکٹر جنرل سی آر پی ایف ایس این شریواستوا نے قومی تحقیقاتی ایجنسی (این آئی اے) کے ہاتھوں 7 علیحدگی پسند لیڈران کی گرفتاری پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ وادی کشمیر میں امن وامان کی صورتحال میں رخنہ ڈالنے والوں کے خلاف کاروائی ہوگی۔

Jul 27, 2017 04:35 PM IST | Updated on: Jul 27, 2017 04:35 PM IST

جموں: جموں وکشمیر کے سپیشل ڈائریکٹر جنرل سی آر پی ایف ایس این شریواستوا نے قومی تحقیقاتی ایجنسی (این آئی اے) کے ہاتھوں 7 علیحدگی پسند لیڈران کی گرفتاری پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ وادی کشمیر میں امن وامان کی صورتحال میں رخنہ ڈالنے والوں کے خلاف کاروائی ہوگی۔ مسٹر شریواستوا نے جمعرات کو یہاں منعقدہ ’سی آر پی ایف ریزنگ ڈے‘ کی تقریب کے حاشئے پر نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ این آئی اے کی تحقیقات نے بہت سی چیزیں صاف کردی ہیں۔ یہ عناصر (علیحدگی پسند لیڈران) سرحد پار سے ملنے والی ہدایات پر عمل درآمد کررہے تھے۔ انہیں کشمیر کے حالات بگاڑنے کے لئے پیسے دیے جارہے ہیں‘۔

انہوں نے کہا ’این آئی اے کی کاروائی سے ٹیرر فنڈنگ کے دروازے بند ہوں گے اور نتیجتاً امن وامان کے معاملات اور دہشت گردانہ سرگرمیوں سے نمٹنا آسان ہوگا‘۔ جنوبی کشمیر کے ضلع اننت ناگ میں امرناتھ یاتریوں پر ہونے والے حالیہ جنگجویانہ حملے کے بارے میں پوچھے جانے پر اسپیشل ڈی جی نے کہا ’ہم نے یاترا کے لئے غیرمعمولی سیکورٹی انتظامات کئے ہیں، لیکن میں یاتریوں سے گذارش کرنا چاہتا ہوں کہ وہ اپنے آپ یاترا پر جانے کے بجائے سیکورٹی قافلوں کا حصہ بن کر جائیں‘۔ انہوں نے کہا ’یاتریوں کو آر او پی ٹائم پر عمل کرنا چاہیے۔ ہم نے ان سے (یاتریوں) گذارش کی ہے کہ وہ یاترا روٹوں پر مقرر کردہ وقت کے دوران ہی سفر کریں‘۔

علاحدگی پسندوں کو کشمیر کے حالات بگاڑنے کیلئے ملتے ہیں پیسے : اسپیشل ڈی جی سی آر پی ایف

file photo

مسٹر شری واستو نے کہا کہ کسی بھی ناخوشگوار واقعہ کو ٹالنے کے لئے ناکوں کے علاوہ گشتی پارٹیوں کی تعداد بھی بڑھا دی گئی ہے۔ کشمیر کی موجودہ صورتحال سے متعلق ایک سوال کے جواب میں سپیشل ڈی جی سی آر پی ایف نے کہا ’یہ مختلف سیکورٹی ایجنسیوں کے مابین قریبی تال میل کا نتیجہ ہے کہ اب تک 100 سے زیادہ جنگجوؤں کو ہلاک کیا جاچکا ہے‘۔ شری ماتا ویشنو دیوی مندر (کٹرہ) میں عقیدت مندوں کے لئے کئے گئے سیکورٹی انتظامات پر مسٹر شریواستوا نے کہا ’کٹرہ میں عقیدتمندوں کوئی خطرہ نہیں ہے۔ ہمارے فوجی کسی بھی تخریبی کاروائی سے نمٹنے کے لئے چوبیسوں گھنٹے الرٹ پر ہیں‘۔ انہوں نے کہا کہ سی آر پی ایف امن وامان کو بنائے رکھنے کے لئے ایک کلیدی کردار ادا کررہی ہے۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز