جموں وکشمیر : دفعہ 35 اے سے چھیڑ چھاڑ کی گئی تو قربانیاں دینے سے گریز نہیں کریں گے: علیحدگی پسند قیادت

Aug 07, 2017 10:54 PM IST | Updated on: Aug 07, 2017 10:54 PM IST

سری نگر: کشمیری علیحدگی پسند قیادت سید علی گیلانی، میرواعظ مولوی عمر فاروق اور محمد یاسین ملک نے آئین کی دفعہ 35 اے کے خلاف کی جارہی مبینہ سازشوں کا سخت نوٹس لیتے ہوئے دھمکی دی ہے کہ ریاست میں لاگو اسٹیٹ سبجیکٹ قانون سے ساتھ کوئی بھی چھیڑ چھاڑ کرنے کی کوشش کی گئی تو کشمیری اس کے دفاع کے لئے اپنے لہو کی قربانیاں دینے سے بھی گریز نہیں کریں گے۔ انہوں نے اسٹیٹ سبجیکٹ قانون کے خلاف کی جارہی سازشوں، کشمیر میں جاری جوانوں کی مبینہ نسل کشی ، جنوبی کشمیر میں عام لوگوں کی بلا تخصیص مارپیٹ اوراین آئی اے اور ای ڈی کے ذریعے علیحدگی پسند قائدین کی گرفتاریاں وتنگ طلبی کے خلاف 12 اگست کو ’کشمیر بند‘ کی کال دے دی ہے۔

مسٹر گیلانی، میرواعظ اور یاسین ملک نے ریاست میں نافذ اسٹیٹ سبجیکٹ قانون (دفعہ 35 اے) کی مجوزہ منسوخی کو حکمرانوں کی ایک اور مذموم کاوش قرار دیتے ہوئے کہا کہ سٹیٹ سبجیکٹ قانون جموں کشمیر میں سابقہ مہاراجہ نے نافذ کیا تھا۔ انہوں نے کہا’ یہ قانون اس لئے نافذ ہے تاکہ یہاں آبادی کے تناسب کو حد میں رکھا جائے کیونکہ یہ سرزمین جنگلات،آبی ذخائر ، ذرخیز میدانوں اور گلیشرز سے بھری پڑی ہے اوراس کی آبادی کے تناسب میں کوئی بھی بگاڑ پورے برصغیر میں ماحولیاتی توازن کو تباہ کرسکتا ہے‘۔

جموں وکشمیر : دفعہ 35 اے سے چھیڑ چھاڑ کی گئی تو قربانیاں دینے سے گریز نہیں کریں گے: علیحدگی پسند قیادت

علیحدگی پسند قیادت نے کہا کہ یہ قانون خاص جموں کشمیر ہی میں نہیں بلکہ جس بھی علاقے میں آبی ذخائر اور جنگلات وغیرہ ہیں وہاں بھی یہی یا اسی قسم کے دفاعی قوانین لاگو ہیں ۔ انہوں نے الزام لگایا کہ آر ایس ایس حکومت کا روز اول سے یہ خواب رہا ہے کہ کسی طرح سے کشمیر کو دوسرے فلسطین میں بدل دیا جائے اور اسرائیلی طرز پر یہاں بھی آبادی کے تناسب کو بدل کر اس کے مسلم تشخص کو مٹایا جاسکے۔ انہوں نے کہا ’ فسطایؤں کے ان مسلم و کشمیر دشمن خوابوں کی تکمیل اور ان مکروہ خاکوں میں رنگ بھرنے کے لئے پی ڈی پی اور دوسرے ہند نواز سیاست کار پیش پیش نظر آتے ہیں کیونکہ اپنے اقتدار کو طول بخشنے یا اقتدار کی لیلیٰ کو گلے لگانے کے لئے یہ لوگ کسی بھی حد سے گزر سکتے ہیں‘۔

مسٹر گیلانی، میرواعظ اور یاسین ملک نے حکمرانوں کو متنبہ کیا کہ اگر انہوں نے یہاں لاگو اسٹیٹ سبجیکٹ قانون سے ساتھ کوئی بھی چھیڑ چھاڑ کرنے کی کوشش کی تو کشمیری اس کے دفاع کے لئے اپنے لہو کی قربانیاں دینے سے بھی گریز نہیں کریں گے۔ انہوں نے کہا ’ بڑھتے ہوئے ظلم و جبر اور قتل وغارت نیز جموں کشمیر کے مذہبی تشخص کو بدلنے کی نیت سے یہاں لاگو اسٹیٹ سبجیکٹ قانون کی مجوزہ منسوخی جیسے مذموم منصوبوں کو پیوستہ خاک کردینے کے لئے کشمیری متحرک ہیں اور اگر یہ مکروہ منصوبے نہیں روکے گئے تو عوام الناس کو سڑکوں پر آکر بھرپور احتجاجی مہم چلانے کی اپیل بھی کی جائے گی‘ ۔ واضح رہے کہ سال 2014 میں وی دی سٹیزن نامی ایک این جی او نے سپریم کورٹ میں ایک رٹ پٹیشن دائر کی جس میں دفعہ 35A کو چیلنج کیا گیا ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز