گاندھی کی توہین پر شاہ اور مودی معافی مانگیں، شیوراج جھوٹی بھوک ہڑتال چھوڑیں: کانگریس

Jun 10, 2017 04:19 PM IST | Updated on: Jun 10, 2017 04:19 PM IST

نئی دہلی۔  کانگریس نے آج الزام لگایا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی کے صدر امت شاہ نے مہاتما گاندھی کو 'چتر بنیا' قرار دے کر بابائے قوم اور آزادی کی لڑائی کے سورماؤں کی قربانی کی توہین کی ہے اس لیے انہیں اور وزیر اعظم نریندر مودی کو ملک کے عوام سے معافی مانگنی چاہئے۔ کانگریس کے میڈیا شعبہ کے سربراہ رندیپ سرجےوالا نے یہاں نامہ نگاروں سے کہا کہ بی جے پی صدر نےبابائے قوم کے ساتھ ہی ملک کے ہزاروں مجاہدین آزادی کی توہین کرکے تحریک آزادی کی تذلیل کرنے کی کوشش کی ہے۔ انہوں نے مسٹر شاہ کو 'اقتدار کا تاجر' قرار دیا اور کہا کہ بی جے پی حکومت مٹھی بھر دولت مندلو گوں کے مفاد کے لئے کام کرہی ہے اس کے لئے وہ دلتوں، غریبوں اور کسانوں کے استحصال کا ذریعہ بن گئی ہے اور اسی لیے اسے ملک کی آزادی کی تحریک اور بابائے قوم مہاتما گاندھی کی لڑائی ایک کاروبار نظر آ رہی ہے۔

مسٹر سرجےوالا نے کہا کہ بی جے پی ذات اور مذہب کے نام پر لوگوں کو لڑانے کے ساتھ بابائے قوم کو بھی ذات سے منسوب کرنے میں لگ گئی ہے جس کے لئے مسٹر شاہ اور وزیر اعظم کو ملک سے معافی مانگنی چاہئے۔ واضح ر ہے کہ مسٹر شاہ نے چھتیس گڑھ میں کل کہا تھا کہ کانگریس کبھی اصولوں پر مبنی پارٹی نہیں رہی ہے اور ملک کو آزادی دلانے کے خاص مقصد سے اس تنظیم کا قیام عمل میں آیا تھا۔ انہوں نے کہا 'مہاتما گاندھی ایک ہوشیار بنیا تھے اسی وجہ سے آزادی کے بعد انہوں نے کانگریس کو ختم کرنے کے لئے کہا تھا۔ "

گاندھی کی توہین پر شاہ اور مودی معافی مانگیں، شیوراج جھوٹی بھوک ہڑتال چھوڑیں: کانگریس

کانگریس لیڈر رندیپ سرجیوالا: فائل فوٹو

شیوراج جھوٹی بھوک ہڑتال چھوڑیں، سیاسی بن باس لے لیں

وہیں،  کانگریس نے مدھیہ پردیش کے وزیر اعلی شیوراج سنگھ چوہان کی بھوک ہڑتال پر سخت رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے آج کہا کہ وہ کسانوں سے جڑے سوالوں کا جواب دینے کی بجائے 'جھوٹی بھوک ہڑتال' کر رہے ہیں جبکہ انہیں سیاسی بن باس لے لینا چاہئے۔  کانگریس کمیونیکیشن سیکشن کے سربراہ رنديپ سنگھ سرجےوالا نے یہاں نامہ نگاروں سے کہا کہ مسٹر چوہان اور بھارتیہ جنتا پارٹی جھوٹی بھوک ہڑتال کرکے اپنے جرم کو چھپانے کے لئے سوانگ کر رہی ہے اورمسٹر چوان ڈھونگ کر رہے ہیں ۔ حکومت کو کسانوں پر فائرنگ کرنے والوں کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کرنا چاہیے تھا لیکن وزیر اعلی چار دن تک اس فائرنگ پر لوگوں کو گمراہ کرتے رہے ۔ انہوں نے مسٹر چوہان کی بھوک ہڑتال کو ڈھونگ اور دکھاوا بتاتے ہوئے کہا "وزیر اعلی اور بی جے پی کو جھوٹی بھوک ہڑتال چھوڑ کر سیاسی بن باس پر جانے کی تیاری کرنی چاہئے۔ 6 کسانوں کے خون سے جس شخص اور جس پارٹی کے ہاتھ رنگے ہیں اس کی پوری کابینہ آج جھوٹی بھوک ہڑتال پر ہے اور یہ انتہائی افسوسناک ہے ''

ترجمان نے کہا کہ مسٹر چوہان کو جھوٹی بھوک ہڑتال بند کر کے کسانوں کے آنسو پوچھنے چاہئے۔ ریاست میں فائرنگ میں 6 کسانوں کے قتل کے بعد جمعہ کو ایک اور کسان کی لاٹھی سے پیٹ پیٹ کر ہلاک کیا گیا اور آج رائے سین میں ایک کسان نے خود کشی کر لی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مسٹر چوہان اور بی جے پی کوجواب دینا چاہئے کہ کسان اپنا آلو اور پیاز دو روپے اور پانچ روپے میں فروخت کرنے کو کیوں مجبور ہے ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز