جارج فرنانڈیز کی راہ پر شرد یادو، جے ڈی یو سے ہو سکتی ہے چھٹی ، نتیش جلد ہی کرسکتے ہیں کوئی فیصلہ

Aug 10, 2017 12:03 AM IST | Updated on: Aug 10, 2017 12:03 AM IST

پٹنہ : جے ڈی یو کے راجیہ سبھا ممبر پارلیمنٹ اور پارٹی کے سابق صدر شرد یادو جمعرات سے بہار کا دورہ شروع کر رہے ہیں ، لیکن سیاسی گلیاروں میں یہ بحث زوروں پر ہے کہ پارٹی مخالف بیان دینے کے لئے شرد یادو کو جلد ہی سائڈلائن کیا جا سکتا ہے۔ سینئر سماجوادی لیڈر شرد یادو نے پوری ریاست میں گھوم کر نتیش کے فیصلے (مهاگٹھ بندھن سے الگ ہونے) کو لے کر لوگوں کے سامنے اپنی رائے رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس سے پہلے بہار میں اتحاد کے خاتمہ کو شرید یادو مینڈیٹ کے ساتھ دھوکہ قرار دیا تھا۔

پارٹی لائن سے الگ بیان دینے کے بعد شرد یادو نشانے پر آ گئے ہیں اور ان کے خلاف پارٹی کی قومی مجلس عاملہ کی پٹنہ میں ہونے والی میٹنگ میں کوئی فیصلہ لیا جا سکتا ہے۔ 26 جولائی کو اتحاد ختم ہونے کے بعد سے شرد یادو نے پہلے پارٹی کے فیصلہ پر خاموش اختیار کرلی تھی اور پھر انہوں نے اس کو مینڈیٹ کے خلاف فیصلہ کو قرار دیا تھا ۔ اس سے پہلے بھی وہ کہہ چکے تھے کہ تیجسوی یادو کے استعفی سے زیادہ ضروری مهاگٹھ بندھن کو بچانا ہے، اگرچہ شرد یادو نے اس بات کو سرے سے مسترد کر دیا کہ وہ نئی پارٹی بنا سکتے ہیں۔

جارج فرنانڈیز کی راہ پر شرد یادو، جے ڈی یو سے ہو سکتی ہے چھٹی ، نتیش جلد ہی کرسکتے ہیں کوئی فیصلہ

ان خبروں کے درمیان نتیش کمار نے پٹنہ میں صحافیوں کے سوال کے جواب میں اشاروں ہی اشاروں میں کہا کہ اچھا ہے ایک ہی جھٹکے میں کچھ اور پریشانیاں ختم ہو جائیں گی۔ اشاروں میں نتیش کا یہ بیان کافی معنی خیز ہے۔ اگرچہ نتیش اور ان کی پارٹی نے کبھی بھی شرد کے خلاف کھل کر کوئی بات نہیں کی۔ نتیش کے بیان کو سمجھنے کے بعد بھی شرد یادو نے بہار کا دورہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور لوگوں کے سامنے اپنے پوائنٹس کو برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا۔

دوسری طرف آر جے ڈی سپریمو لالو پرساد نے کہا ہے کہ وہ شرد یادو کے ساتھ رابطے میں ہیں، اس سے بھی آگے جاکر بدھ کو لالو نے کہا کہ شرد یادو جنتا دل کے بانی رکن ہیں اور شرد یادو اور کانگریس سے ان کا اتحاد جاری رہے گا۔ اس موقع پر لالو نے نتیش کمار پر شرد یادو کے دورے کے دوران سازش رچنے کا الزام بھی عائد کیا۔

ادھر نیوز 18 سے گفتگو کرتے ہوئے ایک جے ڈی یو کے لیڈر نے کہا کہ پارٹی نے ان سے نہ صرف دوری اختیار کرلی ہے بلکہ پارٹی کے کارکنوں کو ان کے دوروں کا مقابلہ کرنے کے لئے بھی کہا گیا ہے۔ پارٹی کے رہنما نے کہا کہ شرد کے فیصلے سے پارٹی کارکنان خوش نہیں ہیں اور وہ جمہوری طریقے سے احتجاج کرنے کے لئے آزاد ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز