راجیہ سبھا سے استعفی نہیں دوں گا ، میں نے جو قدم اٹھایا ، وہ ملک کے مفاد میں اٹھایا : شرد یادو

جنتادل (یو) کے باغی لیڈر شرد یادو نے آج کہاکہ وہ راجیہ سبھا سے استعفی نہیں دیں گے۔

Sep 04, 2017 07:28 PM IST | Updated on: Sep 04, 2017 07:28 PM IST

نئی دہلی: جنتادل (یو) کے باغی لیڈر شرد یادو نے آج کہاکہ وہ راجیہ سبھا سے استعفی نہیں دیں گے۔ مسٹر یادو سے پریس کانفرنس میں یہ پوچھے جانے پر کہ جنتادل (یو) کے صدر نتیش کمار اگر انہیں راجیہ سبھا سے استعفی دینے کے لئے کہیں گے تو وہ کیا کریں گے، انہوں نے کہا کہ وہ استعفی نہیں دیں گے۔ انہوں نے جو قدم اٹھایا ہے وہ خودکے فائدے کے لئے نہیں بلکہ قومی مفاد میں ہے اور وہ قومی امور پر کام کرتے رہیں گے ۔ مسٹر یادو بہار سے راجیہ سبھا کے رکن ہیں۔

شرد یادو نے مزیدکہاکہ مسٹر اٹل بہاری واجپئی اور مسٹر لال کرشن اڈوانی کے وقت کے قومی جمہوری اتحاد (این ڈی اے) اور آج کے این ڈی اے میں زمین آسمان کا فرق ہے۔ مسٹر یادو نے کہاکہ اب کے این ڈی اے کے پاس کوئی ایجنڈہ نہیں ہے جبکہ اس اٹل۔اڈوانی کے وقت کے این ڈی اے کے پاس قومی ایجنڈہ تھا اور اسے تمام متنازعہ امور سے علاحدہ رکھا گیا تھا۔

راجیہ سبھا سے استعفی نہیں دوں گا ، میں نے جو قدم اٹھایا ، وہ ملک کے مفاد میں اٹھایا : شرد یادو

انہوں نے کہاکہ بھارتیہ جنتا پارٹی کے ساتھ ابھی شیو سینا کو چھوڑ کر بہت چھوٹی چھوٹی جماعتیں ہیں جبکہ پہلے بڑی بڑی پارٹیاں اس کے ساتھ تھیں۔ تعداد سے ہی کوئی پارٹی اپنی طاقت کا احساس کراتی ہے۔ ابھی تو دوانی چونی پارٹیاں بی جے پی کے ساتھ ہیں۔

خیال رہے کہ مسٹر یادو نے بہار میں مسٹر کمار کے مہاگٹھ بندھن سے الگ ہوکر بھارتیہ جنتا پارٹی کے ساتھ حکومت سازی کی مخالفت کی تھی اور مسلسل اس کے خلاف آواز اٹھا رہے ہیں ۔ وہ پارٹی کے منع کرنے کے باوجود پٹنہ میں مسٹر لالو پرساد یادو کی ریلی میں شامل ہوئے تھے۔ اس کے بعد انہوں نے خود دہلی اور اندور میں ’ساجھا وراثت بچاؤ سمیلن‘ منعقد کیا جس میں مختلف اپوزیشن جماعتوں کے لیڈروں نے شرکت کی۔

اس کے ساتھ ہی شردیادو گروپ نے الیکشن کمیشن میں کہا ہے کہ پارٹی کے بیشتر عہدیدار اور کارکن اس کے ساتھ ہیں اس لئے اسے ہی جنتادل (یو) کا انتخابی نشان الاٹ کیا جانا چاہئے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز