شعبہ خواتین آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کے زیر اہتمام تحفظ شریعت اور اصلاح معاشرہ کانفرنس کا انعقاد

Jan 28, 2017 08:50 PM IST | Updated on: Jan 28, 2017 08:54 PM IST

نئی دہلی۔ ویمنس ونگ آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کی جانب سے خواتین و طالبات کیلئے نئی دہلی میں ’’تحفظ شریعت اور اصلاح معاشرہ کانفرنس 2017 ‘‘ کا کامیاب انعقاد آج ایوان ، غالب ، غالب انسٹی ٹیوٹ ،میں2 بجے دن عمل میں آیا۔ کانفرنس میں پرانی، نئی دہلی اور اوکھلا کی خواتین و طالبات کثیر تعداد میں موجود تھیں۔ کانفرنس کا آغاز تلاوت کلام پاک سے ہوا۔ محترمہ زینب مجاہدہ رکن آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ نے درس قرآن پیش کیا۔ محترمہ زینت مہتاب رکن آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ نے شریعت اسلامی کا تعارف اور اس کی اہمیت اور ضرورت پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ شریعت اسلامی اللہ کا نازل کردہ دستور حیات ہے۔ اس میں انسان کی پیدائش سے لیکر موت تک کے تمام امور میں رہنمائی و رہبری ملتی ہے۔ شریعت اسلامی آسان، سہل، قابل عمل ضابطہ حیات ہے۔ جس کے ہر پہلو میں خواتین کیلئے ہدایت، رحمت اور تحفظ ہے۔

محترمہ عطیہ صدیقی صاحبہ ناظمہ جماعت اسلامی ہند و رکن آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ نے خواتین کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ شریعت کے احکام مرد و عورت دونوں کیلئے باعث رحمت ہیں۔ ہمارے خالق نے ہمارے فائدے کیلئے اسے نازل کیا۔ شریعت اسلامی ہمارے لئے اللہ کا احسان ہے۔اس سے انحراف اللہ کے غضب کو دعوت دینے کا باعث بنتا ہے۔ خواتین مستقل مزاج ، عزم و حوصلے کی پکی ہوتی ہیں۔ اگر وہ اپنی صلاحیتوں کو مصیبت و مشکل وقت میں استعمال کریں اور اسلامی تعلیمات کو سمجھ کر اپنے گھر کی اصلاح کریں تو پورے سماج میں ایک بہتر انقلاب رونما ہوسکتا ہے۔ مسؤلہ ویمنس ونگ ڈاکٹر اسماء زہرہ نے تحفظ شریعت کے عنوان پر اپنی تقریر میں کہا کہ شریعت کے تحفظ اور بقاء کیلئے دو سمتوں میں کوشش کرنے کی ضرورت ہے۔ ایک ملک کے دستور میں مسلم پرسنل لاء کو دی گئی ضمانتوں کا تحفظ، دوسری کوشش یہ کہ ہماری اپنی نجی ،عائلی، خاندانی، سماجی اجتماعی زندگی میں شریعت کا نفاذ۔

شعبہ خواتین آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کے زیر اہتمام تحفظ شریعت اور اصلاح معاشرہ کانفرنس کا انعقاد

انھوں نے کہا کہ شریعت اسلامی میں عورت و مرد دونوں کومساوی حقوق دئیے گئے ہیں اورنکاح میں لڑکی کی مرضی کولازم قرار دیا گیا ہے۔ حق وراثت میں مرد و عورت کے درمیان کسی طرح کا امتیاز نہیں ہے، بیٹیوں کی پرورش،تعلیم و تربیت پرجنت کی خوشخبری دی گئی ہے۔ شریعت اسلامی میں مسلم خواتین ہر طرح محفوظ ،مطمئن،اور خوش و خرم ہیں۔شریعت اسلامی میں مرد و عورت دونوں کے دائرے مقررہیں۔ شریعت اسلامی میں کسی قسم کا صنفی امتیاز نہیں ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز