گلوکار ابھیجیت کے متنازع ٹویٹس پر شہلا رشید نے توڑی خاموشی ، کچھ اس طرح دیا جواب

May 24, 2017 11:59 PM IST | Updated on: May 24, 2017 11:59 PM IST

نئی دہلی : ابھیجیت بھٹاچاریہ نے جے این یو طلبہ یونین کی سابق نائب صدر شہلا رشید کے خلاف نازیبا ٹویٹ کیا تھا ، جس کے بعد ان کے ٹویٹر اکاؤنٹ کو معطل کر دیا گیا ۔ اس معاملہ پر شہلا رشید نے ایک فیس بک پوسٹ لکھ کر اپنا موقف رکھا ہے ، جس میں انہوں نے کہا ہے کہ 'مجھے سیکس ورکر بلانا دراصل ان بی جے پی لیڈروں کا دفاع ہے ، جن پر خود جنسی اسکینڈل اور غیر سماجی سرگرمیوں میں ملوث رہنے کا الزام ہے ۔

شہلا رشید نے اپنے پوسٹ میں یہ بھی لکھا کہ ابھیجیت پہلے بھی ٹویٹر پر خواتین کے خلاف نازیبا زبان کا استعمال کرتے آئے ہیں ، جس کے لئے انہیں گرفتار بھی کیا جاچکا ہے۔ وہیں انہوں نے سونو نگم کے بیان پر بھی رد عمل ظاہر کرتے ہوئے لکھا کہ سونو نگم نے ٹوئٹر چھوڑنے کی ایک وجہ بی جے پی رہنماؤں کے خلاف میرے الزامات کو بھی بتایا ہے۔

گلوکار ابھیجیت کے متنازع ٹویٹس پر شہلا رشید نے توڑی خاموشی ، کچھ اس طرح دیا جواب

شہلا نے آگے لکھا کہ سونو نے کہا کہ اس سے بی جے پی حامیوں کو اکسایا 'گیا ہے۔ یعنی ایک لڑکی کی حکمراں پارٹی کے رہنماؤں کی طرف سے چلائی جانے والے جنسی اسکینڈل کے تئیں تشویش کا اظہار کرنا اس لڑکی کو گالی دینے اور سیکس ورکر کہنے کے لئے اکسانے کی وجہ بن سکتا ہے؟ '۔

قابل ذکر ہے کہ ابھیجیت نے منگل کو خواتین مخالف کچھ ٹویٹ کئے تھے ، جس کے بعد ان کے خلاف شکایت درج کرائی گئی اور ان کے ٹویٹر اکاؤنٹ کو بھی معطل کر دیا گیا۔ ابھیجیت نے شہلا رشید کے بی جے پی لیڈروں کے جنسی ریکیٹ چلانے کے الزامات والے ٹویٹس کا جواب دیتے ہوئے ان کے (شہلا کے) کردار کو لے کر قابل اعتراض ٹویٹ کیا تھا ۔ بعد میں ابھیجیت کا ٹوئٹر اکاؤنٹ ٹویٹر کی طرف معطل کر دیا گیا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز