شیعہ وقف بورڈ میں ہونے والی بدعنوانی کو لیکر وسیم رضوی پر کستا قانونی شکنجہ

Apr 05, 2017 08:10 PM IST | Updated on: Apr 05, 2017 08:10 PM IST

الہ آباد۔ یو پی میں اقتدار کی تبدیلی کا اثر دکھائی دینے لگا ہے ۔ شیعہ وقف بورڈ میں بڑے پیمانے میں پر ہونے والی بد عنوانی  کے معاملے میں بورڈ  کے چیئر مین وسیم رضوی پر قانونی شکنجہ کستا جا رہا ہے ۔ وسیم رضوی کے خلاف الہ آباد ہائی کورٹ میں چھ مقد مے چل رہے ہیں ۔ گذشتہ دنوں لکھنو میں وسیم رضوی کے خلاف ایک اور ایف آئی آر درج ہونے کے بعد شیعہ وقف بورڈ  میں پائی جا نے والی بد عنوانیاں اب منظر عام پر آنے لگی ہیں ۔یو پی شیعہ وقف بورڈ کے چیئرمین وسیم رضوی کے ارد گرد قانون کا شکنجہ کستا جا رہا ہے۔ الہ آباد ہائی کورٹ میں وسیم رضوی کے خلاف چھ مقدمات پہلے سے ہی زیر سماعت ہیں ۔ وسیم رضوی کے خلاف جو مقدمات الہ آباد ہائی کورٹ میں چل رہے ہیں ان میں شیعہ اوقاف کی غیر قانونی فروخت اور مالی خرد برد جیسے سنگین الزاما ت شامل ہیں ۔ گذشتہ دنوں  لکھنو میں وسیم رضوی کے خلاف ایک اور مقدمہ درج ہونے سے معاملے کی سنگینی میں اور اضافہ ہو گیا ہے ۔ الہ آباد ہائی کورٹ میں وسیم رضوی کے خلاف چل رہے مقدمات کی پیروی اوقاف کے معروف قانون داں فرمان نقوی کر رہے ہیں ۔  فرمان احمد نقوی کا کہنا ہے کہ وسیم رضوی کے چیئرمین رہتے ہوئے شیعہ وقف بورڈ میں کروڑوں روپئے کا گھوٹالہ ہوا ہے ۔

الہ آباد ہائی کورٹ  وسیم رضوی کے خلاف کئی بار نوٹس جاری کر چکا ہے ۔ فرمان نقوی کا کہنا ہے کہ اوقاف کے مسئلے عام طور سے بہت پیچیدہ ہوتے ہیں ۔ان کا کہنا ہے کہ جن الزامات کے تحت وسیم رضوی کے خلاف مقدمات چل رہے ہیں، آنے والے دنوں میں شیعہ وقف بورڈ میں مالی غبن اور اوقاف کے فروخت کیے جانے کے کئی اور سنگین معاملے منظر عام پر آئیں گے ۔

شیعہ وقف بورڈ میں ہونے والی بدعنوانی کو لیکر وسیم رضوی پر کستا قانونی شکنجہ

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز