شیو پال یادو بنائیں گے الگ پارٹی، 11 مارچ کے بعد ہوگا اعلان، اکھلیش پر کیا طنز

Jan 31, 2017 03:42 PM IST | Updated on: Jan 31, 2017 05:02 PM IST

نئی دہلی۔ سماج وادی پارٹی پر اکھلیش یادو کی اجارہ داری کے بعد کنارے لگائے گئے شیو پال یادو نے الگ پارٹی بنانے کا من بنا لیا ہے۔ یہ بات انہوں نے منگل کو جسونت نگر سیٹ سے کاغذات نامزدگی داخل کرنے کے بعد ایک جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ اٹاوہ کے نمائش پنڈال میں کارکنوں اور حامیوں کے ساتھ میٹنگ کے دوران شیو پال نے کہا کہ وہ الگ پارٹی بنائیں گے۔ حالانکہ  اس کا رسمی اعلان وہ 11 مارچ یعنی اترپردیش اسمبلی انتخابات کے نتائج آنے کے بعد ہی کریں گے۔ میٹنگ کے دوران شیو پال نے اکھلیش یادو پر طنز کستے ہوئے کہا کہ انہوں نے ٹکٹ دے کر مہربانی کی ہے۔ شیو پال نے کہا، "اگر ٹکٹ نہ دیتے تو سوچتا۔ ٹکٹ نہیں ملتا تو آزاد امیدوار کے طور پر الیکشن لڑتا۔

شیو پال نے کہا، "پانچ سال تک محنت کی، اب کہاں جائیں؟ 11 مارچ کا رزلٹ دیکھ لینا۔ 11 مارچ کو تم حکومت بنا لو ہم پارٹی بنائیں گے اور پھر سے جدوجہد کریں گے۔ سماج وادی پارٹی کو کمزور کیا گیا۔ اتحاد سے صرف کانگریس کو فائدہ ہو گا۔ انہوں نے کہا، "11 مارچ کو نیتا جی آئیں گے، اس کے بعد ہم پارٹی بنائیں گے۔ ابھی ہم نے فارم بھر دیا ہے۔ کل تک بہت سی قیاس آرائی کی جا رہی تھی لیکن آج ہم نے پرچہ نامزدگی ایس پی اور سائیکل سے بھر دیا ہے۔ آج ہم جو بھی ہیں نیتا جی کی وجہ سے ہیں۔ بہت سے لوگوں نے کہا ہے کہ جو کچھ ہیں نیتا جی کی وجہ سے ہیں۔ انہی لوگوں نے نیتا جی کو ذلیل کرنے کا کم کیا ہے۔

شیو پال یادو بنائیں گے الگ پارٹی، 11 مارچ کے بعد ہوگا اعلان، اکھلیش پر کیا طنز

شیو پال نے مزید کہا، "ابھی جو حکومت چلی تھی 5 سال، ہمارے محکمے کیا کسی سے کم اچھے چلے۔ ہم جانتے ہیں کہ سماج وادی پارٹی میں بھی اندرونی سازش کرنے والے لوگ ہیں۔ ان سے ہوشیار رہنے کی ضرورت ہے۔ ہم صرف غلط کام روک رہے تھے۔ غلط کام کی مخالفت کر رہے تھے، تب ہمیں نکال دیا گیا۔ ہم نے کہا تھا جو چاہے ہم سے لے لو لیکن نیتا جی کی توہین برداشت نہیں کر سکتے۔ مرتے دم تک نیتا جی کے ساتھ رہیں گے اور ان کا حکم مانیں گے۔

شیو پال نے کہا، "ہم لوگ تو زیادہ تر اپوزیشن میں رہے ہیں۔ بی جے پی، بی ایس پی اور کانگریس کو اس وقت شکست دی جب ہمارے پاس کوئی ذریعہ نہیں تھا۔ کانگریس سے اتحاد پر شیو پال نے کہا، "آج سے 6 مہینے پہلے کانگریس کی کیا پوزیشن تھی؟ صرف 4 نشستیں جیتنے کی۔ کس کا فائدہ کیا؟ کانگریس کا۔ ٹکٹ ہمارے لوگوں کا کٹا۔

وہیں، شیو پال کے اس بیان کے بعد اکھلیش یادو نے سخت رد عمل ظاہر کرتے ہوئے کہا، "جو لوگ پارٹی میں اندرونی سازش کر رہے ہیں وہ ساتھ نہیں رہ سکتے۔ جو لوگ ہمیں دھوکہ دے رہے ہیں وہ پارٹی میں نہیں رہ سکتے۔ اچھا ہوا کہ سائیکل ہمیں مل گئی۔ ایس پی اور کانگریس کا اتحاد آنے والے دنوں میں ملک کی سیاست کی سمت طے کرے گا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز