چین نے ہندوستان کو حملے کی دھمکی دی ، کہا : 1962 سے بھی برے ہوں گے حالات

Jul 05, 2017 11:09 AM IST | Updated on: Jul 05, 2017 11:09 AM IST

نئی دہلی : سکم سرحد پر ہندوستان اور چین کے درمیان جاری تنازع میں چین نے کسی بھی معاہدے کو درکنار کرتے ہوئے منگل کو کہا کہ تنازعہ حل کرنا صرف ہندوستان پر منحصر ہے۔ چین نے پوری ذمہ داری ہندوستان پر ڈالتے ہوئے دھمکی بھرے لہجے میں کہا کہ فوجی اختیارات ہندوستان کی پالیسی پر منحصر ہے۔ ہندوستان کو تنازع کا حل طے کرنا ہے۔

چین کے سرکاری اخبار گلوبل ٹائمز کے ایڈیٹوريل میں لکھا گیا ہے کہ ہندوستان کو ایک مرتبہ پھر سبق سکھانے کا وقت آ گیا ہے۔ اس مرتبہ نتائج 1962 سے بھی برے ہوں گے۔ دراصل سکم سیکٹر پر کشیدگی کے درمیان چین نے ہندوستان کو 1962 کی جنگ میں ہندوستان کی شکست یاد دلائی تھی، اس کے بعد وزیر دفاع ارون جیٹلی نے کہا تھا کہ ہندوستان کو 1962 والا ملک سمجھنے کی بھول چین کو نہیں کرنی چاہئے۔ انہوں نے کہا تھا کہ اب وقت بدل چکا ہے۔

چین نے ہندوستان کو حملے کی دھمکی دی ، کہا : 1962 سے بھی برے ہوں گے حالات

چین کے سفیرنے صاف طور پر کہا کہ گیند اب ہندوستان کے پالے میں ہے۔ ہندوستان کو سوچنا ہے کہ تعطل کو دور کرنے کے لئے کون سے اختیارات ہیں۔ انہوں نے کہا کہ چین حکومت کا اس مسئلے کا پر امن حل نکالنے کا موقف بالکل واضح ہے، لیکن، اس کے لئے ہندوتان کو اپنی فوج ہٹانی پڑے گی اور یہ پہلی شرط ہے۔ سرحدی تنازع کو صحیح طرح سے نہیں حل کرنے پر جنگ کے امکان کو لے کر پوچھے گئے ایک سوال پر چینی سفیر نے یہ جواب دیا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز