آخر کہاں ہے چار ماہ سے لاپتہ جے این یو طالب علم نجیب ؟ ایس آئی او کا عدالتی جانچ کا مطالبہ

Feb 26, 2017 03:33 PM IST | Updated on: Feb 26, 2017 04:25 PM IST

نئی دہلی : اسٹوڈنٹ اسلامک آرگنائزیشن آف انڈیا (ایس آئی او ) نے مطالبہ کیا ہے کہ جے این یو کے طالب علم نجیب احمد کے غائب ہونے کی عدالتی جانچ کرائی جائے۔خیال رہے کہ نجیب احمد چار ماہ قبل اکھل بھارتیہ ودیارتھی پریشد اے بی وی پی کے ارکان کے ذریعہ شدید پٹائی کئے جانے کے بعد سے ہی لاپتہ ہے اور پولیس اب تک نجیب کا کوئی سراغ نہیں لگا پائی ہے۔

ایس آئی او کے صدر نهاس مالا نے ایک بیان میں کہا کہ ہم نے وزارت برائے فروغ انسانی وسائل کو ایک میمورنڈم سونپا ہے اور اس معاملہ کی فوری جانچ کرانے کا مطالبہ کیا ہے۔

آخر کہاں ہے چار ماہ سے لاپتہ جے این یو طالب علم نجیب ؟ ایس آئی او کا عدالتی جانچ کا مطالبہ

ایس آئی او نے یہ مطالبہ بھی کیا ہے کہ جے این یو انتظامیہ اور دہلی پولیس کو اس معاملہ میں جوابدہ بنایا جانا چاہئے۔مالا نے کہا کہ ہم معاملے کی عدالتی تحقیقات اور نجیب کی بیمار ماں فاطمہ نفیس کو فوری طور پر امداد دینے کا مطالبہ بھی کرتے ہیں۔

مالا نے یہ بھی کہا کہ اس معاملے میں پیش وکیل کو بھی بنیاد پرست حامی کہا جا رہا ہے۔ مسلم اسٹوڈنٹس کے ساتھ طرح طرح کے غیر مناسب اور امتیازی سلوک برتے جا رہے ہیں، جسے ہر حال میں سختی سے روکنے کی ضرورت ہے۔انہوں نے کہا کہ ایس آئی او نے ملک بھر سے 25 لاکھ دستخط جمع کیے ہیں، جسے قومی انسانی حقوق کمیشن کے سپرد کیا جائے گا۔

خیال رہے کہ نجیب 15 اکتوبر 2016 سے لاپتہ ہے۔ اس معاملہ میں پولیس کے ہاتھ اب بھی خالی ہیں۔ ہائیکورٹ اس معاملہ میں مشتبہ 9 طالب علموں میں سے ایک کی درخواست پر سماعت کر رہا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز