کرنل پروہت کو ضمانت این آئی اے کی معتبریت پر سوالیہ نشان: سیتا رام یچوری

نئی دہلی۔ مارکسی کمیونسٹ پارٹی کے جنرل سکریٹری سیتا رام یچوری نے مالیگاوں بم دھماکہ معاملے میں ملزم لفٹننٹ کرنل سری کانت پرساد پروہت کو ضمانت ملنے پر قومی تفتیشی ایجنسی (این آئی اے) کے رول پر سوال اٹھایا ہے۔

Aug 21, 2017 06:48 PM IST | Updated on: Aug 21, 2017 06:48 PM IST

نئی دہلی۔ مارکسی کمیونسٹ پارٹی کے جنرل سکریٹری سیتا رام یچوری نے مالیگاوں بم دھماکہ معاملے میں ملزم لفٹننٹ کرنل سری کانت پرساد پروہت کو ضمانت ملنے پر قومی تفتیشی ایجنسی (این آئی اے) کے رول پر سوال اٹھایا ہے۔ مسٹر یچوری نے اسے حیرت انگیز اور عجیب قرار دیتے ہوئے آج یہاں نامہ نگاروں سے کہا کہ کرنل پروہت کو ضمانت ملنے سے پورے معاملے کی جانچ کرنے والی این آئی اے پر شبہ پیدا ہوتا ہے۔ این آئی اے کو اس سلسلے میں وضاحت پیش کرنی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ مالیگاوں دھماکہ معاملے میں این آئی نے ہی پرگیا ٹھاکر‘ اسیمانند اور کرنل پروہت کو گرفتار کروایا تھا لیکن آج وہی سب لوگ یکے بعد دیگرے ضمانت پر رہا ہورہے ہیں۔ ایسے میں جانچ ایجنسی کو یہ واضح کرنا چاہئے کہ ان لوگوں کو گرفتار ہی کیوں کیا گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ پورا واقعہ این آئی اے کی معتبریت پر سوال کھڑا کرتا ہے۔

این آئی اے کے سربراہ کی سروس میں توسیع کرنے کو ایک سازش قرار دیتے ہوئے مسٹر یچوری نے کہا کہ یہ سروس میں توسیع دینے والی سرکار ہے ۔ این آئی کے سربراہ کو سروس میں توسیع دی گئی۔ گجرات میں ریٹائرڈ افسران کو واپس ملازمت پر بلا لیا گیا۔ اس سب کے پیچھے ضرور کوئی سازش ہے۔

کرنل پروہت کو ضمانت این آئی اے کی معتبریت پر سوالیہ نشان: سیتا رام یچوری

مالیگاؤں 2008 بم دھماکہ معاملے کے کلیدی ملزم لیفٹیننٹ کرنل پرساد پروہت کی فائل فوٹو۔

اس سے پہلے آج سپریم کورٹ کے جج آر کے اگروال اور جسٹس ابھے منوہر سپرے کی بنچ نے نو سال پرانے مالیگاوں دھماکہ معاملے کے ملزم کرنل پروہت کی بامبے ہائی کورٹ کے حکم کے خلاف اپیل کو تسلیم کرتے ہوئے ان کو ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دیا ۔ ہائی کورٹ نے کرنل پروہت کی ضمانت عرضی گذشتہ 25 اپریل کو مسترد کردی تھی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز