نوٹ بندی کے محاذ پر ناکامی اور عوام کے ساتھ دھوکہ کی ذمہ داری طے کی جائے : سیتا رام یچوری

سیتا رام یچوری نے نوٹ بندي کو "بڑی ناکامی اور عوام کے ساتھ دھوکہ" قرار دیتے ہوئے اس کے لئے کسی کی ذمہ داری طے کرنے اور مجرم پائے جانیوالے کے خلاف سخت کروائی کرنے کا مطالبہ کیا

Aug 31, 2017 10:19 PM IST | Updated on: Aug 31, 2017 10:20 PM IST

نئی دہلی : مارکسی کمیونسٹ پارٹی کے سیکرٹری جنرل سیتا رام یچوری نے نوٹ بندي کو "بڑی ناکامی اور عوام کے ساتھ دھوکہ" قرار دیتے ہوئے اس کے لئے کسی کی ذمہ داری طے کرنے اور مجرم پائے جانیوالے کے خلاف سخت کروائی کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

ریزرو بینک آف انڈیا کی طرف سے نوٹوں پر پابندی کے نتائج سے متعلق سرکاری اعداد و شمار سامنے آنے کے بعد مسٹریچوری نے آج مودی حکومت کو نرغے میں لیا اورمذکورہ مطالبہ کیا۔ انہوں نے مودی حکومت سے نوٹ بندی پر 14 سوال بھی کئے اور کہا کہ نوٹبندي کا اعلان کرتے ہوئے وزیر اعظم نے چار ہدف گنوائے تھے لیکن ان میں سے ایک مقصد بھی پورا نہیں ہوا اور اس طرح نہ تو کالا دھن سامنے آیا، نہ تو کرپشن ختم ہو ا، نہ ہی دہشت گردی ختم ہوئی اور نہ ہی نکسل ا زم کا خاتمہ ہوا۔ البتہ تقریبا 2 لاکھ کروڑ روپے کا نقصان ہی ہوا۔100 لوگ بینکوں کی لائن میں مارے گئے۔آکر ان سب کے لئے کون ذمہ دار ہے!

نوٹ بندی کے محاذ پر ناکامی اور عوام کے ساتھ دھوکہ کی ذمہ داری طے کی جائے : سیتا رام یچوری

انہوں نے اس کے لئے وزیر اعظم مودی کی استعفی کا مطالبہ تو نہیں کیا لیکن ر زور سے کہا کہ شک کی سوئی مسٹرمودی پر ہے ۔ وزیراعظم نےہی نوٹوں پر پابندی کا فیصلہ کیا تھا۔  سی پی ایم لیڈر نے نوٹ بندی پر طنز کرتے ہوئے وائٹ پیپر(قرطاس ابیض) کی جگہ بلیک پیپر (قرطاس اسود) جاری کرنے کا بھی مطالبہ کیا اور یہ بھی کہا کہ نوٹ بندی کالا دھن پکڑنے کے لئے نہیں بلکہ کالے دھن کو جائز کرنے کے لئے کی گئی تھی اور جعلی نوٹوں کو بھی جمع کرایا گیا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز