اترپردیش میں جانوروں کے قتل کرنے پر این ایس اے کے تحت ملے گی سزا

Jun 06, 2017 01:34 PM IST | Updated on: Jun 06, 2017 01:34 PM IST

لکھنئو۔ اتر پردیش میں جانوروں کی اسمگلنگ اور قتل کو لے کر نئے اور سخت قوانین لاگو کر دیے گئے ہیں۔ اس طرح کے معاملات کے قصورواروں کو نیشنل سیکورٹی ایکٹ (این ایس اے) کے سخت دفعات کے تحت سزا دی جائے گی۔ اس کے ساتھ ہی ان پر گینگسٹرس ایکٹ اور اینٹی سوشل ایکٹ کے تحت بھی کارروائی ہوگی۔ ریاست کے پولیس ہیڈکوارٹر کی طرف سے جاری ایک نوٹس میں یہ بات کہی گئی ہے۔

اس سلسلے میں اکھلیش یادو حکومت کے دوران ہی حکومت نے حکم جاری کیا تھا، حالانکہ اب تک اس پر سختی سے عمل نہیں کیا جا رہا تھا۔ یہ فیصلہ ایسے وقت میں آیا ہے جب ملک کے کئی حصوں میں مرکزی حکومت کے ذریعہ جانوروں کی فروخت پر پابندی لگانے کی مخالفت ہو رہی ہے۔ اس قانون کے مطابق سلاٹر کے لئے مارکیٹ میں جانوروں کی فروخت پر پابندی عائد کی گئی ہے۔

اترپردیش میں جانوروں کے قتل کرنے پر این ایس اے کے تحت ملے گی سزا

گیٹی امیجیز

مرکزی حکومت کے فرمان کی کیرالہ، میگھالیہ اور تمل ناڈو میں کافی مخالفت ہو رہی ہے۔ گزشتہ دنوں آئی آئی ٹی مدراس میں اس کی مخالفت میں طلبا نے بیف پارٹی کا اہتمام کیا تھا، مدراس ہائی کورٹ نے گزشتہ دنوں مرکز کے اس حکم پر چار ہفتے کے لئے بین لگایا ہے۔ وہیں میگھالیہ کے دو بی جے پی لیڈروں نے پارٹی سے استعفی دے دیا ہے۔

 

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز