کانگریس کا نیا جوش موجودہ چیلنجوں سے نمٹنے کے قابل: سونیا گاندھی

کانگریس صدر سونیا گاندھی نے آج کہا کہ ملک کے سامنے موجودہ وقت میں اتنے بڑے بڑے چیلنجز ہیں جواس سے پہلے کبھی نہیں رہے اور انہیں امید ہے کہ پارٹی کی نئی قیادت اور نیا جوش ان چیلنجوں سے نمٹنے کے قابل ہے۔

Dec 16, 2017 01:25 PM IST | Updated on: Dec 16, 2017 01:25 PM IST

نئی دہلی۔ کانگریس صدر سونیا گاندھی نے آج کہا کہ ملک کے سامنے موجودہ وقت میں اتنے بڑے بڑے چیلنجز ہیں جواس سے پہلے کبھی نہیں رہے اور انہیں امید ہے کہ پارٹی کی نئی قیادت اور نیا جوش ان چیلنجوں سے نمٹنے کے قابل ہے۔ نو منتخب کانگریس صدر راہل گاندھی کو پارٹی کی کمان سونپنے کے لئے یہاں منعقد تقریب میں مسز گاندھی نے کہا کہ سابق وزیر اعظم اندرا گاندھی اور سابق وزیر اعظم راجیو گاندھی کی قربانیوں کو بامعنی بنانے کے لئے 20 سال پہلے جب انہوں نے کانگریس کی باگ ڈور سنبھالی تھی اس وقت بھی پارٹی کے سامنے کئی بڑے چیلنجز تھے، لیکن آج ملک ان سے بھی بڑے چیلنجوں کا سامنا کر رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ وہ مسٹر گاندھی کے جوش کو سمجھتی ہیں۔ حالیہ دنوں میں مسٹر گاندھی پر ہوئے ذاتی حملوں نے انہیں اور مضبوط اور نڈر بنایا ہے اور انہیں پورا بھروسہ ہے کہ وہ ان چیلنجوں کا ڈٹ کر مقابلہ کر سکیں گے۔ مسز گاندھی نے کہا کہ وہ کانگریس کارکنوں کے جوش کو بھی جانتی ہیں اور جو بے مثال ہے۔ وہ ملک کے لئے جدوجہد کرنے کو تیار ہیں۔ وہ جھکیں گے نہیں، پیچھے ہٹیں گے نہیں کیونکہ کانگریس کا مقصد ملک اور اس کے اقدار کی حفاظت کرنا ہے۔ مسز گاندھی نے کہا کہ آج ملک کے بنیادی اصول و اقدار پر باقاعدہ حملے ہو رہے ہیں۔ ہمارے ثقافتی ورثہ اور ثقافت کو کمزور کیا جا رہا ہے۔ پورے ملک میں خوف کا ماحول ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس ماحول میں کانگریس کو اپنے دل میں جھانک کر کام کرنا ہو گا اور پارٹی کارکنوں کو ایک اخلاقی جنگ جیتنے کے لئے قربانی اور تیاگ کے لئے تیار رہنا پڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ ان کو راہل کے صبر و تحمل پر یقین ہے اور وہ پارٹی کواپنی قابلیت کے ساتھ آگے بڑھائیں گے۔

کانگریس کا نیا جوش موجودہ چیلنجوں سے نمٹنے کے قابل: سونیا گاندھی

مسز گاندھی نے کہا کہ وہ کانگریس کارکنوں کے جوش کو بھی جانتی ہیں اور جو بے مثال ہے۔

مسز گاندھی نے کہا کہ ان کے شوہر اور سابق وزیر اعظم راجیو گاندھی کے قتل کے بعد وہ اپنے خاندان کو سیاست سے دور رکھنا چاہتی تھیں۔ لیکن، ملک کے سامنے جو چیلنجز پیدا ہو گئے تھے وہ مسز اندرا گاندھی اور مسٹر راجیو گاندھی کے اصولوں کے خلاف تھے۔ ان چیلنجوں سے لڑنے کے لئے وہ سیاست میں آئیں اور پارٹی صدر کا عہدہ سنبھالا۔ کانگریس کارکنان کی مدد سے پارٹی کو مضبوط کیا اور کئی ریاستوں میں اس کی حکومت بنی۔ مسز گاندھی نے کہا کہ کانگریس قیادت والی متحدہ ترقی پسند حکومت نے ملک کے تمام طبقات کو آگے بڑھانے کے لئے اس وقت کے وزیر اعظم ڈاکٹر منموہن سنگھ کی قیادت میں منریگا جیسی کئی اہم اسکیمیں شروع کیں اور انتہائی متاثر کن قانون بنائے جس پر انہیں فخر ہے۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز