اکھلیش یادو کی دو ٹوک ، جسے جانا ہے جائے ، تاکہ مجھے بھی پتہ چلے کہ مصیبت میں کون ہے میرے ساتھ

Aug 07, 2017 07:42 PM IST | Updated on: Aug 07, 2017 07:42 PM IST

لکھنؤ: سماج وادی پارٹی کے صدر اور اترپردیش کے سابق وزیر اعلی اکھلیش یادو نے کہا ہے کہ پارٹی کے جن لوگوں کو جہاں بھی جانا ہو چلے جائیں تاکہ انہیں بھی پتہ رہے کہ برے وقت میں کون کون ان کے ساتھ رہے۔ رکشا بندھن کے موقع پر پارٹی دفتر میں منعقد تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مسٹر یادو نے کہاکہ جو سماج وادی پارٹی چھوڑ کر جارہے ہیں حقیقت میں ان کی اپنی مجبوریاں ہیں۔ بکل نواب کا زمین کا کوئی معاملہ سننے میں آرہا ہے۔ نواب صاحب ہی کیا کریں۔ بی جے پی سے دور رہنے والا شخص زمین مافیا ہوجاتا ہے اور اس میں شامل ہونے کے بعد گناہ معاف ہوجاتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ جن ساتھیوں کو کسی بھی پارٹی میں جانا ہے وہ جائیں تو کوئی بہانہ نہ بنائیں۔ ہمیں بھی پتہ رہنا چاہئے کہ کتنے لوگ برے وقت میں ہمارے ساتھ رہے۔

خیال رہے کہ حال ہی میں قانون ساز کونسل میں سماج وادی پارٹی کے تین اراکین نے بی جے پی کی رکنیت اختیار کرلی ۔ سماج وادی پارٹی کے صدر نے کہا کہ پارٹی کسی بھی شخص سے بڑی ہوتی ہے۔ انہوں نے ہمیشہ پارٹی کو سب سے بالا تر سمجھا ہے لیکن پارٹی میں اتار چڑھاو آنے پر کون اس میں رہتا ہے یہ جاننا بھی ضروری ہے۔

اکھلیش یادو کی دو ٹوک ، جسے جانا ہے جائے ، تاکہ مجھے بھی پتہ چلے کہ مصیبت میں کون ہے میرے ساتھ

انہویں نے مزید کہا کہ بہار میں بی جے پی کے تعاون سے جاری نتیش کمار حکومت نے قبرستان کی باونڈری تعمیر کرنی شروع کردی ہے۔ وزیر اعّم نے ان کی حکومت میں اسی طرح کی باونڈری بنوانے پر سخت نکتہ چینی کی تھی۔ انہوں نے مرکز اور ریاستی حکومت پر کسانوں کو نظر انداز کرنے کا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ آلو اور گیہوں کی پیداوار کرنے والے کسان رورہے ہیں۔ انہوں نے طنز کرتے ہوئے کہا کہ صرف بابا رام دیو کی آمدنی دوگنا ہوجانے سے کام نہیں چلے گا ۔ کسانوں کی بھی آمدنی دوگنا ہونی چاہئے۔

مسٹر یادو نے کہا کہ بی جے پی لیڈر عوام کو گمراہ کررہے ہیں۔ بی جے پی نے اپنے عہد نامہ میں بڑے بڑے وعدے کئے تھے اب وہ انہیں یاد نہیں آرہے ہیں۔ فصل کی پیداوار لاگت میں پچاس فیصداضافی قیمت دینے کا وعدہ پورا نہیں کررہے ہیں۔ کسانوں کی آمدنی دوگنا کیسے کریں گے یہ بتا نہیں پارہے ہیں۔

سماج وادی پارٹی صدر نے کہا کہ جی ایس ٹی اور نوٹ بندی سے بی جے پی حکومت کے پاس بہت سارے روپے جمع ہوگئے ہیں۔ انہیں چاہئے کہ وہ مسلم بیٹیوں کو کم سے کم پانچ لاکھ روپے شادی کے لئے دیں۔ سماج وادی حکومت نے سماج کے تمام طبقات کے فائدے کے لئے منصوبہ بنایا تھا جب کہ بی جے پی حکومت کے وقت غریبوں کے مفادات والے کئی منصوبے بند کردئے گئے ہیں ۔ خواتین اپنے آپ کو غیر محفوظ محسوس کررہی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ سماج وادی پارٹی نو اگست کو کرانتی دیوس کے موقع پر دیش بچاو دیش بناو نعرے کے ساتھ عوام کی آواز زور شور سے اٹھائے گی اور بی جے پی کی عوام دشمن پالیسیوں کا پردہ فاش کرے گی۔ بی جے پی اور آرایس ایس کی پالیسیوں کے خلاف عوام سے اٹھ کھڑا ہونے کی اپیل کرے گی۔ تقریب میں خواتین کارکنوں نے مسٹر یادو کو راکھی باندھی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز