لال قلعہ ، پارلیمنٹ ، راشٹرپتی بھون اور قطب مینار بھی غلامی کی نشانیاں ، انہیں بھی مٹادینا چاہئے : اعظم خان

سماجوادی پارٹی کے سینئر لیڈر اعظم خان نے محبت کی نشانی تاج محل سے متعلق بی جےپی لیڈر سنگیت سوم کے بیان پر تیکھا جوابی حملہ کیا ہے۔

Oct 17, 2017 02:37 PM IST | Updated on: Oct 17, 2017 02:37 PM IST

رامپور : سماجوادی پارٹی کے سینئر لیڈر اعظم خان نے محبت کی نشانی تاج محل سے متعلق بی جےپی لیڈر سنگیت سوم کے بیان پر تیکھا جوابی حملہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ وہ تاج محل سے متعلق سنگیت سوم کے بیان کا جواب نہیں دیں گے ۔ گوشت کا کارخانہ چلانے والوں کو رائے دینے کا کوئی حق نہیں ہے ، اس پر یوگی اور مودی فیصلہ کریں گے۔

اعظم خان نے کہا کہ لیکن پہلے سے ہی میری یہ رائے ہے کہ غلامی کی ان تمام نشانیوں کو مٹا دینا چاہئے ، جس سے کل کے حکمرانوں کی بو آتی ہو، یہ سچ ہے کہ مغل ہندوستان پر قابض ہوئے ، لیکن حالات میں آئے ، کون لے کر آیا ، یہ بحث اگر ہوگی تو بحث پر کڑواہٹ آجائے گی اور لوگ ہماری بات کا برا مانیں گے۔

لال قلعہ ، پارلیمنٹ ، راشٹرپتی بھون اور قطب مینار بھی غلامی کی نشانیاں ، انہیں بھی مٹادینا چاہئے : اعظم خان

سماجوادی پارٹی کے سینئر لیڈر اعظم خان

انہوں نے مزید کہا کہ میں نے تو پہلے ہی کہا تھا کہ اکیلے تاج محل ہی کیوں ، پارلیمنٹ ، راشٹرپتی بھون ، قطب مینار ، دہلی کا لال قلعہ یہ سب غلامی کی نشانیاں ہیں ، ہم بادشاہ سے اپیل کرتے ہیں اور ہم نے چھوٹے بادشاہ سے تو کہا ہے کہ چلو آپ آگے ، ہم آپ کے ساتھ چلیں گے۔

اعظم خان نے کہا کہ پہلا پھاوڑہ آپ کا ہوگا اور دوسرا ہمارا ہوگا، ہمت تو کریں ۔ اعظم نے کہا کہ میں سمجھتا ہوں کہ کہنے کے بعد قدم پیچھے ہٹا لینا سیاسی نامردی ہے ، جو لوگ اسے غلامی کی نشانی کہہ رہے ہیں ، ان کا تو پورے ملک پر راج ہے اور قبضہ ہے۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز