کارپوریشن ٹکٹ کی تقسیم پر تینوں اہم سیاسی پارٹیوں کے کارکنوں میں زبردست ناراضگی

Apr 03, 2017 01:37 PM IST | Updated on: Apr 03, 2017 06:12 PM IST

نئی دہلی۔  دہلی کے تینوں کارپوریشنوں کے الیکشن کیلئےٹکٹوں کی تقسیم کے سلسلے میں تینوں اہم سیاسی پارٹیوں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی)، کانگریس اور عام آدمی پارٹی (آپ) کے کارکنوں میں شدید ناراضگی پائی جا رہی ہے۔ کانگریس کے قدآور لیڈر اور سابق وزیر اشوک والیہ اپنے حامیوں کو ٹکٹ نہ ملنے سے ناراض بتائے جا رہے ہیں۔ ایسی قیاس آرائیاں بھی ہیں کہ اگر ان کی بات نہ مانی گئی تو وہ پارٹی بھی چھوڑ سکتے ہیں۔ ٹکٹ نہ ملنے سے ناراض بی جے پی کے کارکنوں نے آج پارٹی کے ریاستی دفتر پہنچ کر اپنے غصہ کا اظہار کیا۔ شمال مشرقی موجپور وارڈ سے ٹکٹ نہ ملنے سے ناراض ضلع کی نائب صدر پشپا بھٹ کے مستعفی ہونے کی بھی اطلاع ہے۔ کشن کنج وارڈ کی نائب صدر پونیتا شرما بھی ٹکٹ نہ ملنے سے ناراض بتائی جا رہی ہیں۔

واضح رہے کہ کل راجوری گارڈن میں ایک روڈ شو کے دوران آپ پارٹی کے لیڈر سنجے سنگھ پر ٹکٹ نہ ملنے سے ناراض ایک عورت نے تھپڑ مارنے کی کوشش کی تھی۔ دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال کو بھی ایک جلسہ کے دوران لوگوں کی مخالفت کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

کارپوریشن ٹکٹ کی تقسیم پر تینوں اہم سیاسی پارٹیوں کے کارکنوں میں زبردست ناراضگی

کانگریس لیڈر، اے کے والیہ

تینوں کارپوریشنوں کیلئے الیکشن 23 اپریل کو ہوں گے اور آج نام واپسی کی آخری تاریخ ہے۔ بی جے پی ابھی تک اپنے تمام امیدواروں کا اعلان نہیں کر پائی ہے۔ اس وقت تینوں کارپوریشنوں پر بی جے پی کا قبضہ ہے اور 272 وارڈوں میں سے 153 پر اس کے کونسلر ہیں۔ بی جے پی نے اس بار اپنے موجودہ کونسلروں یا اس کے رشتہ داروں کو ٹکٹ نہ دینے کا اعلان کیا ہے۔ کل پارٹی نے 160 امیدواروں کا اعلان کیا تھا۔ پانچ سیٹیں اکالی دل کیلئے چھوڑی ہیں۔ ان وارڈوں پر اکالی دل کے امیدوار بی جے پی کے انتخابی نشان پر ہی میدان میں اتریں گے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز