جموں و کشمیر میں پاکستان اور سعودی عرب کے چینلوں کی نشریات کو بند کرنے کی مودی حکومت نے دی محبوبہ کو ہدایت

May 06, 2017 09:53 AM IST | Updated on: May 06, 2017 11:38 AM IST

نئی دہلی : مرکزی حکومت نے جموں و کشمیر کی حکومت سے کہا کہ وہ پاکستانی اور سعودی عرب کے چینلوں کے ریاست میں غیر مجاز نشریات کو روکنے کے لئے فوری اقدامات اٹھائے ۔  سرکاری ذرائع نے بتایا کہ اطلاعات و نشریات کے وزیر ایم وینکیا نائیڈو نے ریاست کے چیف سکریٹری سے بات کی ہے اور جلد سے جلد اس پر عمل درآمد کی رپورٹ مانگی ہے ۔ انہوں نے ان خبروں پر تشویش ظاہر کی ، جس میں کہا گیا ہے کہ ریاست میں ان چینلوں کو بغیر اجازت نشر کیا جا رہا ہے ۔ اس سے پہلے دن میں اطلاعات و نشریات کے وزیر مملکت راجیہ وردھن سنگھ راٹھور نے کہا تھا کہ جو کیبل آپریٹر مبینہ طور پر غیر مجاز چینلز نشر کر رہے ہیں ، ان کے آلات پر قبضہ کرنے کا ریاست کی مقامی انتظامیہ کو حق ہے ۔

راٹھور نے بتایا کہ حکومت نے ریاست کو ایڈوائزری بھیجی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ غیر مجاز چینلوں پر مرکز اس طرح کی ایڈوائزری باقاعدہ طور پر بھیجتا رہتا ہے ۔

جموں و کشمیر میں پاکستان اور سعودی عرب کے چینلوں کی نشریات کو بند کرنے کی مودی حکومت نے دی محبوبہ کو ہدایت

انہوں نے کہا کہ جب بھی ایسی کوئی خبر سامنے آتی ہے ، تو ہم اس پر توجہ دیتے ہیں ۔ ایسے واقعات کے بارے میں رپورٹ طلب کرنا ہمارا کام ہے ۔ کارروائی کی جا رہی ہے ۔  یہاں ایک پروگرام سے الگ انہوں نے نامہ نگاروں سے کہا کہ کشمیر میں ضلع مجسٹریٹ یا مجاز سرکاری افسر کو کیبل آپریٹرز کے خلاف کارروائی کرنے اور ان کے سامان ضبط کرنے کا حق ہے ۔

وزیر موصوف ان خبروں پر اپنا ردعمل ظاہر کر رہے تھے ، جس میں کہا گیا تھا کہ سعودی عرب اور پاکستان سمیت ذاکر نائیک کی ممنوعہ پیس ٹی وی سمیت تقریبا 50 چینل ہندوستان مخالف مہم میں ملوث ہیں اور کشمیر میں نجی کیبل نیٹ ورک کے ذریعہ کسی ضروری منظوری کے بغیر مبینہ طور پر ان کا نشر کیا جا رہا ہے ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز