وائس چانسلر کی اپیل رائیگاں ، جامعہ ملیہ اسلامیہ میں طالب علموں کی بھوک ہڑتال آٹھویں دن بھی جاری

Nov 01, 2017 11:19 PM IST | Updated on: Nov 01, 2017 11:19 PM IST

نئی دہلی : سنٹرل یونیورسٹی جامعہ ملیہ اسلامیہ کے وائس چانسلر طلعت احمد نے طلبہ یونین کے انتخابات کیمانگ کے سلسلے میں بھوک ہڑتال کر رہے طلبہ سے کل رات ملاقات کرکے تحریک واپس لینے کی اپیل کی۔ طالب علموں کی تحریک آج 8 ویں دن بھی جاری ہے۔مسٹرطلعت احمد نے کل دیر رات جامعہ احاطہ میں دھرنے کی جگہ پر طالب علموں سے ملاقات کی ۔ انہوں نے طالب علموں سے اپنی ضد چھوڑ کرہڑتال ختم کرنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ یہ معاملہ عدالت میں زیر غور ہے اس لئے اس پر فوری فیصلہ نہیں لیا جا سکتا۔

اس سے قبل، انہوں نے ہڑتال کرنے والے ایک طالب علم میران حیدر سے اسپتال میں جاکر ملاقات کی ۔ گزشتہ شام میران کی طبیعت اچانگ بگڑگئی تھی جس کے بعد اسے ہسپتال میں داخل کرایاگیا تھا۔وائس چانسلر مسٹر احمد نے کہا کہ طلبہ یونین کا انتخابات کرانے کے سلسلے میں وہ نظریاتی طور پر متفق ہیں، لیکن عدالت میں معاملہالتواء ہونے کی وجہ سے اس پر جلدی میں کوئی فیصلہ نہیں کیا جا سکتا۔ اگر عدالت میں معاملے کی سماعت مکمل ہوئے بغیر فیصلہ کیا گیاتوایسا کرنا مناسب نہیں ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ ہم تمام ملکر قانونی معاملے کو سمجھیں گےاور عدالت میں جو مقدمہ ہے اسے ختم کرنے کی کوشش کریں گے۔

وائس چانسلر کی اپیل رائیگاں ، جامعہ ملیہ اسلامیہ میں طالب علموں کی بھوک ہڑتال آٹھویں دن بھی جاری

وائس چانسلر کی اپیل پر طالب علموں کی جوائنٹ ایکشن فورم نے آج ایک میٹنگ کا انعقاد کیا جس کے بعد انہوں نے اپنی تحریکجاری رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔جوائنٹ ایکشن فورم میں آئیسا، این ایس یو آئی، ایس ایف آئی، سی وائی سی ایس سمیت مختلف طلبہ تنظیموں کے کارکنان شامل ہیں۔جوائنٹ ایکشن فورم کی ایک رکن اور سوشیالوجی ڈیپارٹمنٹ کی آخری سال کی طالبہ خوشبو خان ​​نے يو این آئی کو بتایا کہ طلبہ یونین کی بحالی کے مطالبات کے لئے چھیڑی گئی تحریک آٹھویں دن بھی جاری ہے۔ بھوک ہڑتال پر بیٹھے دو طلباء ميران حیدر (ایم فل)اور شمشیر خان غازی (بی اے انگریزی) کی طبیعت زیادہ خراب ہونے کی وجہ سے انہیں ہسپتال میں داخل کرایا گیا ہے جبکہ دیگر طلبہ  بتدریج بھوک ہڑتال کر رہے ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز