Live Results Assembly Elections 2018

سنندا پشکر مشتبہ موت کیس : ہائی کورٹ نے دہلی پولیس سے دو ہفتوں میں اسٹیٹس رپورٹ طلب کی

دہلی ہائی کورٹ نے سابق مرکزی وزیر ششی تھرور کی اہلیہ سنندا ​​پشکر کی مشتبہ موت کے معاملے میں دہلی پولیس سے دو ہفتے کے اندر اندر تحقیقات کی اسٹیٹس رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔

Aug 30, 2017 09:29 PM IST | Updated on: Aug 30, 2017 09:29 PM IST

نئی دہلی: دہلی ہائی کورٹ نے سابق مرکزی وزیر ششی تھرور کی اہلیہ سنندا ​​پشکر کی مشتبہ موت کے معاملے میں دہلی پولیس سے دو ہفتے کے اندر اندر تحقیقات کی اسٹیٹس رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔ جسٹس جی ایس سستاني اور جسٹس چندر شیکھر کی دورکنی بنچ نے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) لیڈر سبرامنیم سوامی کی عدالت کی نگرانی میں تشکیل کردہ مرکزی تفتیشی بيورو (سی بی آئی) کی قیادت والی ڈسیپلنری انکوائری سے متعلق عرضی پر سماعت کے دوران تحقیقات میں چل رہی تاخیر پر آج دہلی پولیس کی سخت سرزنش کی۔

ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل سنجے جین کےاس بیان کے بعد کہ اب تک جوجانچ ہوئی ہے عدالت اسے دیکھ سکتی ہے ،بنچ نے کہا ضرورت پڑنے پر وہ اسے ضروردیکھیں گے۔انہوں نے دعوی کیا کہ تحقیقات میں کسی طرح کی تساہلی نہیں برتی گئی ہے اور عدالت چاہے تو اس میں شامل سینئر پولیس افسران سے اپنے چیمبر میں معلومات حاصل کی جا سکتی ہے۔

سنندا پشکر مشتبہ موت کیس :  ہائی کورٹ نے دہلی پولیس سے دو ہفتوں میں اسٹیٹس رپورٹ طلب کی

سنندا پشکر اور ششی تھرور : فائل فوٹو

دلی پولیس نے کہا کہ اس معاملے سے متعلق مختلف سائنسی رپورٹوں میں تاخیرہوئی ہے۔ اس کی طرف سے کسی قسم کی تحقیقات میں تاخیر نہیں ہوئی ہے۔ پولیس نے کہا کہ تکنیکی جانچ مکمل طور پر اس کے ہاتھ میں نہیں تھا۔ اس میں آل انڈیا میڈیکل سائنسز (ایمس) اور کچھ غیر ملکی ادارے شامل ہیں۔ سنندا ​​پشکر 17 جنوری 2014 کو فائیو اسٹار لیلا ہوٹل کے کمرہ نمبر 345 میں مشتبہ حالت میں مردہ پائی گئی تھیں۔ یہ کمرہ اس وقت سے سیل ہے۔ ہوٹل انتظامیہ نے کمرہ کھولنے کے لئے عدالت میں گزشتہ دنوں عرضی دائر کی تھی اس وقت بھی عدالت نے معاملے کی جانچ میں ہو رہی تاخیر پردہلی پولیس پر ناراضگی ظاہر کی تھی۔

بنچ نے کہا کہ یہ مناسب نہیں ہوگا کہ تحقیقات کا کام یا نگرانی کورٹ کرے لیکن وہ یہ ضرور جاننا چاہے گی کہ اس معاملے میں تحقیقات کہاں تک پہنچی ہے۔ بینچ نے کہا ہے کہ یہ مقدمہ جنوری 2014 سے ہے اور نصف سے زائدیہ سال بھی گزر چکاہے۔ تین سال سے زائد عرصے کے دوران، کچھ بھی پختہ نتیجہ سامنے نہیں آیا ہے۔ بینچ نے کہا کہ ہمیں آپ کی رپورٹ دیکھنے میں ہچک نہیں ہے، لیکن ہم تحقیقات کی نگرانی بھی کریں ، یہ درست نہیں ہے۔عدالت نے اگلی سماعت کیلئے دو ہفتوں کی تاریخ طے کرتے ہوئے مسٹر جین سے کہا کہ اس وقت تک وہ یہ معلوم کرلیں کہ اس کیس میں پیش رفت کہاں تک کی گئی ہے۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز