بینک۔موبائل کو آدھار سے نہیں کرنا ہوگا لنک،حکومت نہیں کر سکتی مجبور:سپریم کورٹ

بینک کھاتوں کو آدھار کارڈ کے ساتھ جوڑنے کا وقت سپریم کورٹ نے غیر یقینی معینہ طور پر بڑھا دیا ہے۔حکم سے پہلے آخری تاریخ 31 مارچ 2018 تھی۔سپریم کورٹ نے کہا کہ حکومت ایمرجنسی پاسپورٹ کیلئے بھی آدھار کو پابند نہیں بنا سکتی۔

Mar 13, 2018 06:14 PM IST | Updated on: Mar 13, 2018 06:21 PM IST

نئی دہلی۔بینک کھاتوں کو آدھار کارڈ کے ساتھ جوڑنے کا وقت سپریم کورٹ نے غیر یقینی معینہ طور پر بڑھا دیا ہے۔حکم سے پہلے آخری تاریخ 31 مارچ 2018 تھی۔سپریم کورٹ نے کہا کہ حکومت ایمرجنسی پاسپورٹ کیلئے بھی آدھار کو پابند نہیں بنا سکتی۔غور طلب ہیکہ گزشتہ سال 15 دسمبر کی ڈیڈلائن کو کورٹ نے آدھار کو بینک کھاتوں اور موبائل فون سے لنک کرنے کی آخری تاریخ کو 31مارچ2018کر دیا تھا۔

عام لوگوں کو بڑی راحت

بینک۔موبائل کو آدھار سے نہیں کرنا ہوگا لنک،حکومت نہیں کر سکتی مجبور:سپریم کورٹ

بینک کھاتوں کو آدھار کارڈ کے ساتھ جوڑنے کا وقت سپریم کورٹ نے غیر یقینی معینہ طور پر بڑھا دیا ہے۔حکم سے پہلے آخری تاریخ 31 مارچ 2018 تھی۔

سپریم کورٹ یہ فیصلہ ان لوگوں کیلئے راحت کی خبر لیکر آیا ہے جنہوں نے ابھی تک اپنا فون اور بینک اکاؤنٹ آدھار سے لنک نہیں کرایا تھا۔پہلے سے یہ قیاس لگائے جا رہے تھے کہ سپریم کورٹ آدھار لنکنگ کی ڈیڈ لائن بڑھادے گا۔

۔31مارچ تک ان کیلئے ضروری تھا آدھار کارڈلنکنگ

بینک اکاؤنٹ

میچوئل فنڈ

پوسٹ آفس اسکیم

انشورینس

موبائل سم

سوشل سکیورٹی اسکیم

سپریم کورٹ نے کیا کہا

سپریم کورٹ نے کھاتوں کو آدھار سے جوڑنے کا وقت بڑھایا،بینک کھاتوں اور موبائل کیلئے بھی بڑھی ڈیڈ لائن۔

سپریم کورٹ سماعت پوری کر کے فیصلہ دینے تک بڑھی آدھار سے کھاتوں کو جوڑنے کی ڈیڈی لائن ۔صرف سبسڈی فائدہ اور سرسز یعنی سماجی فلاح و بہبود اسکیموں کیلئے رہے گا آدھار۔

پانچ ججوں کی بنچ کا فیصلہ

پانچ ججوں کی بنچ نے آدھار کی آئینی مدت کو چیلنج دینے والی عرضی پر سماعت کرتے ہوئے پر یہ بھی کہا کہ سبسڈی کو چھور کر باقی خدمات کیلئے  بھی حکومت آدھار نمبر پیش کرنے پر بھی زور نہیں دے سکتی اور اس معاملے میں اس کا پرانہ فیصلہ موثر رہے گا۔

اب آگے کیا

اس سے پہلے حکومت نے کورٹ سے کہا تھا کہ وہ آدھار لنکنگ ڈیڈ لائن کو 31 مارچ سے آگے بڑھانے پر غورو فکر کر سکتی ہے۔پانچ ججوں کی بنچ آدھار اسکیم آئینی مدت کو چیلنج دینے والی عرضی پر غور کر رہی ہے۔چونکہ یہ معاملہ غور کرنے والا ہے۔ایسے میں اس مہینے سے پہلے اس پر کسی آخری فیصلے کا امکان کم ہی ہے۔

۔80فیصد بینک اکاؤنٹ آدھار سے جڑے۔

اب تک ملک بھر کے قریب 80فیصد بینک اکاؤنٹس آدھار سے لنک ہو چکے ہیں۔بینک اکاؤنٹس میں مشتبہ سرگرمیوں اور فراڈ جیسے معاملوں کو روکنے کیلئے حکومت نے بینک اکھتوں اور پینکارڈ کو آدھار سے لنک کرانے کے احکام جاری کئے تھے۔اس کے علاوہ موبائل خدمات کرنے والوں کی پہچان یقینی کرنے کیلئے حکومت نے سم کارڈ کو بھی آدھار سے لنک کرانے کی بات کہی تھی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز