سپریم کورٹ کا الیکشن کمیشن سے سوال ، آخرکیوں نہ نتیش کمار کی قانون ساز کونسل کی رکنیت ختم کردی جائے؟

Sep 11, 2017 05:28 PM IST | Updated on: Sep 11, 2017 05:28 PM IST

نئی دہلی: سپریم کورٹ نے انتخابی حلف نامے میں حقائق کو چھپانے کے سلسلے میں بہار کے وزیر اعلی نتیش کمار کو نااہل قرار دینے سے متعلق عرضی پر آج الیکشن کمیشن سے جواب طلب کیا ہے۔ چیف جسٹس دیپک مشرا کی صدارت والی بنچ نے پیشے سے وکیل منوہر لال شرما کی عرضی کی سماعت کرتے ہوئے الیکشن کمیشن کو نوٹس جاری کرکے پوچھا ہے کہ آخر کیوں نہ مسٹر کمار کی قانون ساز کونسل کی رکنیت ختم کردی جائے ۔ عدالت نے جواب کے لئے چار ہفتے کا وقت دیا ہے۔

عرضی میں الزام لگایا گیا ہے کہ مسٹر کمار نے اپنے انتخابی دستاویزات میں ان کے خلاف قتل کامعاملہ درج ہونے کی جانکاری نہیں دی ۔ عرضی میں مسٹر شرما نے مطالبہ کیا ہے کہ بہار کے وزیر اعلی کو قانون ساز کونسل سے نااہل قرار دیا جاناچاہئے کیوں کہ انہوں نے 2004 اور 2012 میں انتخابی دستاویزات جمع کراتے وقت مجرمانہ معاملات کی جانکاری چھپائی۔

سپریم کورٹ کا الیکشن کمیشن سے سوال ، آخرکیوں نہ نتیش کمار کی قانون ساز کونسل کی رکنیت ختم کردی جائے؟

عرضی میں مزید دعوی کیا گیا ہے کہ نتیش نے اپنے دور حکومت میں 1991 کے بعد سے ہی غیر ضمانتی جرم میں ضمانت تک نہیں لی اور ساتھ ہی سترہ سال بعد معاملے میں پولیس کو کلوزر رپورٹ بھی فائل کروالی۔ عرضی میں مسٹر کمار کے خلاف جانچ کا حکم دینے کا مطالبہ بھی کیا گیا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز