سپریم کورٹ میں بابری مسجد-رام جنم بھومی مقدمہ کی سماعت 8 فروری تک ملتوی

Dec 05, 2017 06:54 PM IST | Updated on: Dec 05, 2017 06:55 PM IST

نئی دہلی۔ سپریم کورٹ نے بابری مسجد-رام جنم بھومی مقدمے کی اپیلوں پر سماعت 8 فروری 2018 تک کے لئے ملتوی کردی۔ چیف جسٹس دیپک مشرا کی صدارت والی بنچ نے متعلقہ فریقوں کے ایڈ وکیٹ آن ریکارڈ کو حکم دیا کہ وہ تمام دستاویزات کے ترجمہ اور انہیں منسلک کئے جانے اور تمام فریقوں کو دستیاب کرائے جانے کے بارے میں جوائنٹ میمورنڈم رپورٹ پیش کریں ۔ بنچ میں چیف جسٹس کے علاوہ جسٹس سید عبدالنظیر اور جسٹس اشوک بھوشن شامل ہیں۔

عرضی گزاروں کی جانب سے پیش ہونے والے وکیل راجیو دھون اور کپّل سبل نے عدالت سے درخواست کی کہ اس معاملے کو آئینی بنچ کے سپرد کیا جائے۔ مقدمہ کے ایک فریق سینٹرل وقف بورڈ کے وکیل مسٹر سبل نے ملک میں موجودہ ماحول سازگار نہ ہونے کا حوالہ دیتے ہوئے معاملے کی اگلی سماعت 2019 کے عام انتخابات کے بعد جولائی میں کرنے کی اپیل کی۔

سپریم کورٹ میں بابری مسجد-رام جنم بھومی مقدمہ کی سماعت 8 فروری تک ملتوی

بابری مسجد: فائل فوٹو

خیال رہے کہ عدالت عظمی اس معاملے میں الہ آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف مختلف فریقوں کی طرف سے دائر اپیلوں کی سماعت کر رہی ہے۔ الہ آباد ہائی کورٹ نے اپنے فیصلے میں اجودھیا کی متنازعہ اراضی کو تین حصوں میں تقسیم کرتے ہوئے اس کا مالکانہ حق سنی وقف بورڈ، رام للا اور نرموہی اکھاڑے کو دیا تھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز