ریان انٹرنیشنل اسکول قتل کیس: سپریم کورٹ نے مرکز، ہریانہ حکومت اور سی بی آئی سے مانگا جواب

Sep 11, 2017 04:00 PM IST | Updated on: Sep 11, 2017 04:00 PM IST

گروگرام۔ گروگرام کے ریان انٹرنیشنل اسکول میں ہوئے 7 سات سال کے طالب علم کے قتل کے معاملے میں سپریم کورٹ نے پرديمن کے والد برن کمار ٹھاکر کی درخواست پر سماعت کی۔ کورٹ نے مرکزی حکومت، ہریانہ حکومت اور سی بی آئی کو نوٹس دیا ہے۔ کورٹ نے تین ہفتے میں جواب مانگا ہے کہ کیا اس معاملے کی جانچ سی بی آئی سے کروائی جانی چاہیے۔

پرديمن کے والد برن ٹھاکر نے کہا، "سپریم کورٹ نے ہماری درخواست پر مرکزی حکومت، ہریانہ حکومت اور سی بی آئی کو نوٹس جاری کیا ہے اور تین ہفتے کے اندر جواب دینے کو کہا ہے۔ یہ نوٹس صرف ایک اسکول تک محدود نہیں ہے، ملک کے سبھی اسکولوں کے بارے میں ہے، ذمہ داری طے ہو، سی بی آئی جانچ ہو، یہ ہماری مانگ ہے۔ " انہوں نے کہا کہ انہیں سپریم کورٹ اور ہریانہ حکومت پر پورا بھروسہ ہے۔

ریان انٹرنیشنل اسکول قتل کیس: سپریم کورٹ نے مرکز، ہریانہ حکومت اور سی بی آئی سے مانگا جواب

پرديمن کے والد برن ٹھاکر نے کہا، "سپریم کورٹ نے ہماری درخواست پر مرکزی حکومت، ہریانہ حکومت اور سی بی آئی کو نوٹس جاری کیا ہے اور تین ہفتے کے اندر جواب دینے کو کہا ہے۔

ریان کیس کے علاوہ چار دنوں میں ملک کے مختلف نجی اسکولوں میں طلباء و طالبات کے ساتھ ہوئے واقعات کے بعد اسکولوں میں طلبہ کی حفاظت پر سپریم کورٹ نے ازخود نوٹس لیا ہے۔ اس معاملہ میں کورٹ میں منگل کو سماعت ہو گی۔

بتا دیں کہ پردیمن 8 ستمبر کو اسکول کے واش روم میں خون سے لت پت ملا تھا۔ اسے ہسپتال لے جایا گیا لیکن وہاں ڈاکٹروں نے اسے مردہ قرار دے دیا۔ دیر شام پولیس نے اسکول کے بس کنڈکٹر کو ایک قاتل کے طور پر پیش کیا۔ پولیس نے بتایا کہ ملزم نے بچے کے ساتھ بدفعلی کی کوشش کی۔ بدفعلی میں ناکام رہنے پر اس نے بچہ کا قتل کر دیا۔

 

 

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز