تو ایک مرتبہ پھر سہارا گروپ سربراہ سبرت رائے کو جانا پڑ سکتا ہے تہاڑ جیل

Apr 27, 2017 04:52 PM IST | Updated on: Apr 27, 2017 04:52 PM IST

نئی دہلی: سیکورٹیز ایکسچینج بورڈ (سیبی) کے ساتھ تنازعہ میں سہارا گروپ سربراہ سبرت رائے نے آج سپریم کورٹ کو تحریری یقین دہانی(انڈرٹیکنگ)کرائی کہ وہ اس سال 15 جون تک سیبی سہارا اکاؤنٹ میں 1500 کروڑ روپے جمع کرا دیں گے۔ مسٹر رائے نے عدالت کے سامنے 552 کروڑ روپے کا پوسٹ ڈیٹیڈ چیک (پی ڈی سی)بھی جمع کرایا، 15 جولائی تک اس رقم کو کیش کرایا جا سکتا ہے۔

عدالت نے کیس کی سماعت کے لئے 19 جون کی تاریخ مقرر کرتے ہوئے مسٹر رائے کو اس دن بھی عدالت میں موجود رہنے کا حکم دیا۔ گذشتہ 21 مارچ کو ہوئی سماعت میں عدالت نے اپنے حکم میں ترمیم کرتے ہوئے کہا تھا کہ اگر سہارا گروپ نے 17 اپریل تک 5،092.64 کروڑ روپے سیبی کے پاس جمع نہیں کرائے تو پھر وہ امبي ویلی کو نیلام کرنے کی کارروائی شروع کر دے گی۔

تو ایک مرتبہ پھر سہارا گروپ سربراہ سبرت رائے کو جانا پڑ سکتا ہے تہاڑ جیل

جسٹس دیپک مشرا، جسٹس اے کے سیکری اور جسٹس رنجن گوگوئي کی بنچ نے گذشتہ 17 اپریل کو ہوئی سماعت میں سہارا گروپ کی پونے واقع امبي ویلی کو نیلام کرنے کا حکم دیا تھا اور مسٹر رائے کو ذاتی طور پر آج عدالت میں پیش ہونے کا حکم دیا تھا۔ عدالت کے حکم پر عمل کرتے ہوئے مسٹر رائے آج عدالت کے سامنے پیش ہوئے۔ بنچ نے کہا کہ اگر سماعت کی اگلی تاریخ تک 1500 کروڑ روپے سیبی کے اکاؤنٹ میں نہیں آئے تو مسٹر رائے کو دوبارہ تہاڑ جیل جانا پڑے گا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز