تاج محل کو 100 برسوں تک محفوظ رکھنے کیلئے سپریم کورٹ کی یوگی حکومت کو جامع منصوبہ تیار کرنے کی ہدایت

سپریم کور ٹ نے تاج محل کے آس پاس ماحولیاتی تحفظ کے سلسلے میں اترپردیش حکومت کی رپورٹ کو فوری کوشش قرار دیتے ہوئے اسے ایک مفصل اور جامع منصوبہ تیار کرنے کی کی ہدایت دی۔

Dec 08, 2017 08:18 PM IST | Updated on: Dec 08, 2017 08:18 PM IST

نئی دہلی: سپریم کور ٹ نے تاج محل کے آس پاس ماحولیاتی تحفظ کے سلسلے میں اترپردیش حکومت کی رپورٹ کو فوری کوشش قرار دیتے ہوئے اسے ایک مفصل اور جامع منصوبہ تیار کرنے کی کی ہدایت دی۔ جسٹس مدن بی لوکور کی سربراہی میں قائم بنچ نے اترپردیش کی یوگی حکومت سے کہا ہے کہ وہ تاج محل کو 100 برسوں تک محفوظ رکھنے کے لئے دستاویز بصیرت پیش کرے۔

جسٹس لوکور نے کہا کہ یوگی حکومت ایک ایسا وژن لیٹر پیش کرے جس سے تاج محل 100 برسوں تک محفوظ رہے ۔ عدالت نے کہا کہ تاج محفوظ خطہ (ٹی ٹی زیڈ) 6 اضلاع میں پھیلا ہوا ہے جو تقریبا 10400 مربع کلومیٹر پر محیط ہے۔ اس میں اترپردیش میں آگرہ، فیروز آباد، متھرا، ہاتھرس اور ایٹاوہ کے علاوہ راجستھان کا بھرت پور بھی شامل ہے۔ سرکاری اسے محفوظ کرنے کے لئے بھی وژن لیٹر پیش کرے۔

تاج محل کو 100 برسوں تک محفوظ رکھنے کیلئے سپریم کورٹ کی یوگی حکومت کو جامع منصوبہ تیار کرنے کی ہدایت

عدالت نے یوگی حکومت سے کہا کہ اسے اس عمارت کو 15 یا 20 سال کے لئے محفوظ ں نہیں کرنا ہے بلکہ اسے 300، 400 سال کے لئے محفوظ رکھنا ہے۔عدالت عظمی نے کہا کہ عارضی منصوبے سے کام نہیں چلے گا۔عدالت نے مزید کہا کہ حکومت کا منصوبہ صرف نوکر شاہوں کا تیار کردہ ہے۔ مگر اس کے لئے ماہرین کی ضرورت ہوگی جس میں تاریخ، ثقافت اور ماحولیات سے منسلک لوگوں کو شامل کیا جانا چاہئے۔عدالت نے اس بات پر بھی زور دیا کہ حکومت منصوبہ تیار کرنے میں سول سوسائٹی کے افراد کی بھی خدمات حاصل کرے۔

واضح رہے کہ اترپردیش حکومت نے اپنے حلف نامے میں تاج محفوظ خطہ (ٹی ٹی زیڈ) کے تحفظ کے بارے میں کئی اقدامات کی بات کی ہے جن میں شجر کاری، الیکٹرک بسوں کا استعمال اور جمنا میں ربر ڈیم بناکر تاج محل کے لئے پانی کی سطح بنائے رکھنے سمیت کئی اقدامات شامل ہیں۔ حلف نامے میں ٹی ٹی زیڈ کے تحفظ کے سلسلے میں اگلے تین سال کی تفصیلات دی گئی ہیں۔ اس معاملے کی آئندہ سماعت 8 ہفتے بعد ہوگی۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز