مودی حکومت کو جھٹکا ، آدھار سے پین کارڈ کو جوڑنے کے حکم پر سپریم کورٹ نے لگائی روک

Jun 09, 2017 03:37 PM IST | Updated on: Jun 09, 2017 03:41 PM IST

نئی دہلی : سپریم کورٹ نے پین کارڈ سے آدھار کو جوڑنے کے حکومت کے فیصلہ پر جمعہ کو روک لگا دی۔ کورٹ نے کہا کہ اس پر آئینی بینچ کے فیصلے تک روک لگی رہے گی۔ انکم ٹیکس ایکٹ کے تحت انکم ٹیکس ریٹرن بھرنے اور پین کارڈ بنوانے کے لئے آدھار کارڈ کو لازمی قرار دیا گیا تھا۔سپریم کورٹ نے کہا کہ جن کے پاس آدھار کارڈ نہیں ہے، وہ پین کارڈ کے ذریعہ انکم ٹیکس ریٹرن بھر سکتے ہیں۔ کورٹ نے یہ بھی کہا کہ جن کے پاس آدھار کارڈ ہے انہیں لنک کرنا ہوگا۔

بتا دیں کہ جسٹس اے کے سیکری اور جسٹس اشوک بھوشن کی بنچ نے چار مئی کو درخواستوں پر اپنا فیصلہ محفوظ رکھ لیا تھا۔ ان درخواستوں میں انکم ٹیکس ایکٹ کی دفعہ 139 اے کو چیلنج کیا گیا تھا، جسے سال رواں کے بجٹ اور فائنانس ایکٹ 2017 کے ذریعے نافذ کیا گیا تھا۔

مودی حکومت کو جھٹکا ، آدھار سے پین کارڈ کو جوڑنے کے حکم پر سپریم کورٹ نے لگائی روک

سپریم کورٹ آف انڈیا: فائل فوٹو

انکم ٹیکس ایکٹ کی دفعہ 139 اے اے کے تحت یکم جولائی سے انکم ٹیکس ریٹرن بھرنے کے دوران یا پین کارڈ الاٹمنٹ کے لئے آدھار نمبر لنک کرنا ضروری تھا۔ حکومت کے قدم کی مخالفت کرتے ہوئے سی پی آئی لیڈر سمیت متعدد درخواست گزاروں نے عدالت میں دعوی کیا تھا کہ مرکز سپریم کورٹ کے 2015 کے اس حکم کی اہمیت کو کم نہیں کرسکتی ، جس میں آدھار کو رضاکارانہ بتایا گیا تھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز