بی جے پی لیڈر انل وج نے تاج محل کو خوبصورت قبرستان بتایا ، سبرامنیم سوامی کا ہڑپی زمین پر تعمیر کا دعوی

Oct 20, 2017 05:49 PM IST | Updated on: Oct 20, 2017 08:05 PM IST

نئی دہلی : دنیا بھر میں محبت کی نشانی کے طور پر مشہور تاج محل کو لے کر بی جے پی کے فائر برانڈ لیڈر سنگیت سوم کے متنازع بیان سے جاری ہوا سلسلہ اب بھی تھمنے کا نام نہیں لے رہا ہے اور یکے بعد دیگرے بی جے پی لیڈران اس میں کودتے نظر آرہے ہیں ۔ اب تازہ بیان بی جے پی کے دو لیڈروں نے دیا ہے ۔ ایک ہیں متنازع بیانات کیلئے سرخیوں میں رہنے والے سبرامنیم سوامی تو دوسرے ہریانہ کے وزیر انل وج ہیں ۔ جہاں انل وج نے تاج محل کو ایک خوبصورت قبرستان قراردیا ہے ، تو وہیں سبرامنیم سوامی کا دعوی ہے کہ تاج محل ہڑپی گئی ایک زمین پر بنایا گیا ہے۔

خیال رہے کہ بی جے پی لیڈر سنگیت سوم نے تاج محل کو ایک دھبہ قرار دیا تھا ، جس کے بعد ان کی چوطرفہ تنقید کی گئی تھی اور بی جے پی حکومت بھی بیک فٹ پر آگئی تھی ۔ یوگی آدتیہ ناتھ کو خود ڈیمیج کنٹرول کی کمان سنبھال پڑ گئی تھی اور انہوں نے اسے ایک اہم عمارت قرار دیا تھا ۔ ساتھ ہی ساتھ آگرہ کے دورہ کا بھی اعلان کیا تھا۔ تاہم اس کے بعد بھی بی جے لیڈروں کی بیان بازیاں نہیں تھمی تھیں اور پھر ونے کٹیار نے اس کو ایک مندر بتایا تھا۔

بی جے پی لیڈر انل وج نے تاج محل کو خوبصورت قبرستان بتایا ، سبرامنیم سوامی کا ہڑپی زمین پر تعمیر کا دعوی

اب تازہ بیان ہریانہ کے وزیر انل وج کا سامنے آیا ہے ۔ انل وج نے ٹویٹر پر ایک ٹویٹ کیا کہ تاج محل ایک خوبصورت قبرستان ہے ۔ وزیر موصوف کے اس ٹویٹ پر لوگوں نے شدید ردعمل کااظہار کیا ۔ ایس ایس بشنوئی نام کے ایک شخص نے لکھا کہ قبرستان - شمسان کے علاوہ کوئی اور مدعا دکھائی نہیں دیتا کیا ؟ عوم کی تکلیف سمجھو ورنہ الیکشن میں تمہاری سیاسی قبر ضرور کھود دے گی۔

وکاس شرما نام کے ایک دوسرے یوزر نے لکھا :قبرستان ، لیکن ایک بے وقوف تھا کوئی وہ مندر بتارہا تھا۔ جبکہ سنجے کمار نام کے ایک یوزر نے کہا : مندر یا قبرستان ، ایک بات پر رہو یار ۔ ایک اور یوزر منی ساگو نے کہا : بس مذہب کے نام پر لڑواتے رہو اور سیاسی روٹیاں سینکتے رہو۔ خیال رہے کہ انل وج ایسے لیڈر ہیں جو ہر متنازع معاملہ میں کود جاتے ہیں ۔

انل وج کے بعد بی جے پی کے ایک اور لیڈر سبرامنیم سوامی نے دعوی کیا ہے کہ ان کے پاس ایسے دستاویزات موجود ہیں ، جس سے ثابت ہوتا ہے کہ جس جائیداد پر تاج محل بنایا گیا ہے وہ مغل حکمراں شاہجہاں نے جے پور کے راجاوں سے ہڑپی تھی۔ نامہ نگاروں سے بات چیت میں سوامی نے کہا کہ ثبوت آن ریکارڈ موجود ہیں کہ شاہ جہاں نے جے پور کے راجا -مہاراجاوں کو اس زمین کو فروخت کرنے پر مجبور کیا تھا ، جس پر تاج محل بنا ہوا ہےاور معاوضہ کے طور پر انہیں گاو دئے گئے ، جو کہ اس جائیداد کی قیمت کے آگے کچھ بھی نہیں ، جس پر تاج محل بنا ہوا ہے۔

ساتھ ہی ساتھ سبرامنیم سوامی نے کہا کہ وہ جلد ہی ایسے ثبوتوں کے کی کاپی میڈیا میں بھی جاری کریں گے۔ بی جے پی لیڈر نے کہا کہ دستاویز بتاتے ہیں جائیداد پر ایک مندر بھی تھا حالانکہ ابھی تک یہ صاف نہیں ہے کہ مندر کو گرا کر تاج محل بنایا گیا تھا۔تاہم سبرامنیم سوامی نے یہ بھی کہا کہ بی جے پی کی تاج محل کو منہدم کرنے کی کوئی منشا نہیں ہے ، لیکن مسلم حکمراں کے دوران گرائے گئے ہزاروں مندروں میں سے وہ صرف تین مندر چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا ہمیں صرف تین مندر چاہئے ، اجودھیا میں رام مندر ، متھرا میں کرشن مندر اور وارانسی میں کاشی وشوناتھ مندر۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز