قرض معافی کیلئے جنتر منتر پر مظاہرہ کر رہے تمل ناڈو کے کسانوں نے پیا پیشاب ، اتوار کو کھائیں گے انسانی فضلہ

Apr 22, 2017 02:11 PM IST | Updated on: Apr 22, 2017 02:12 PM IST

نئی دہلی : جنتر منتر پر ایک ماہ سے زیادہ وقت سے احتجاج کررہے تمل ناڈو کے کسانوں کے صبر کا باندھ شاید اب ٹوٹ چکا ہے۔ کسانوں نے ہفتہ کو احتجاجا لئے پیشاب پیا ۔ کسانوں نے اب اتوار کو انسانی فضلہ کھا کر مظاہرہ کرنے کی دھمکی کیا ہے۔

غور طلب ہے کہ تمل ناڈو کے کسان مرکز سے قرض معافی اور مالی امداد کی مانگ کے ساتھ دھرنے پر بیٹھے ہیں۔ خشک سالی کے سبب ان کی فصل ختم ہوگئی ہے۔ ان کسانوں کا مطالبہ ہے کہ حکومت ان کے لئے خشک سالی ریلیف پیکیج جاری کرے۔

قرض معافی کیلئے جنتر منتر پر مظاہرہ کر رہے تمل ناڈو کے کسانوں نے پیا پیشاب ، اتوار کو کھائیں گے انسانی فضلہ

photo : ANI

کسان جنتر منتر میں پلاسٹک کی بوتلوں میں پیشاب کے ساتھ سامنے آئے۔ اس سے پہلے، نیشنل ساؤتھ انڈین ریور لنکنگ فارمرس ایسوسی ایشن کے ریاستی صدر پی اياكنكو نے کہا کہ 'تمل ناڈو میں پینے کے لئے پانی نہیں مل رہا اور وزیر اعظم مودی ہماری پیاس کو نظر انداز کر رہے ہیں۔ ایسا لگتا ہے کہ مودی حکومت ہمیں انسان ہی نہیں سمجھتی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز