موب لنچنگ کے خلاف مانسون سیشن میں قانون نہیں بنایا گیا تو تحریک تیز کی جائے گی: تحسین پوناوالا

Jul 13, 2017 02:52 PM IST | Updated on: Jul 13, 2017 02:53 PM IST

نئی دہلی۔ مرکزی حکومت سے موب لنچنگ کے خلاف قانون بنانے کا مطالبہ کرتے ہوئے سماجی کارکن تحسین پونا والا نے کہا کہ اگر مانسون سیشن میں حکومت اس کے خلاف قانون نہیں بناتی تو قانون بنانے کے حق میں تحریک کو مزید تیز کریں گے۔ انہوں نے دعوی کیا کہ مانو سرکشا قانون (مسوکا) کی سینئر وکلاء اور سینئر جج تعریف کر رہے ہیں اور یہ قانون کسی کے خلاف نہیں ہے بلکہ انسانیت کے حق میں ہے۔ انہوں نے اس کی وضاحت کی کہ موب لنچنگ کے شکار خواہ آر ایس ایس کے لوگ ہیں یا کوئی اور یہ قانون سب کے حقوق کی حفاظت کرے گا۔ انہوں نے کہا کہ اگر حکومت نے مانسون سیشن میں اسے قانونی شکل نہیں دی تو کچھ ممبران پارلیمنٹ پرائیویٹ بل کی شکل میں اسے قانون بنانے کے لئے پیش کر سکتے ہیں۔

مسٹر تحسین پونا والا نے یو این آئی سے بات چیت کرتے ہوئے اس قانون کو مسلمانوں یا اقلیتوں کے حق میں ہونے کے مفروضے کو مسترد کردیا اور کہا کہ اگر کیرالہ میں آر ایس ایس کے لوگ موب لنچنگ کے شکار ہوتے ہیں تو یہ قانون انہیں بھی انصاف دلائے گا ۔ یہ کسی کے خلاف نہیں ہے صرف موب لنچنگ کے خلاف ہے۔ انہوں نے دعوی کیا کہ موب لنچنگ کے واقعات ملک کے کئی حصے میں ہوئے ہیں جس سے ملک کی شبیہ خراب ہورہی ہے۔ انہوں نے مانو سرکشا قانون کے بارے میں بتاتے ہوئے کہا کہ اس قانون میں (1 )غیر ضمانتی وارنٹ کا التزام ہے۔(2 )جرم ثابت ہونے پر عمر قید کی سزا ہوگی۔ (3)موب لنچنگ کا واقعہ جس علاقے میں ہوگا اس علاقے کے ایس ایچ او کوذمہ دار ٹھہرایا جائے گا۔(4 ) اس کی جانچ عدالتی کمیشن سے کرائی جائے گی۔ (5) اس معاملے کی سماعت سریع الحرکت عدالت (فاسٹ ٹریک کورٹ) کرے گی۔ انہوں نے بتایا کہ اس کے علاوہ متاثرہ خاندان کو 25 لاکھ روپے کے معاوضہ سے بازآبادکاری کا التزام ہے تاکہ متوفی کا خاندان کسی مالی بحران کا شکار نہ ہو۔ انہوں نے مزید کہا کہ پارلیمنٹ کے موجودہ سیشن میں اگر موب لنچنگ کے خلاف قانون نہیں بنایا گیا تو ملک بھر کے جا نوروں کی پرورش کرنے والے کسان اور موب لنچنگ تحریک چلانے والے ارکان وزیر اعظم کی رہائش گاہ پر جانوروں کے ساتھ دھرنا دیں گے۔

موب لنچنگ کے خلاف مانسون سیشن میں قانون نہیں بنایا گیا تو تحریک تیز کی جائے گی: تحسین پوناوالا

تصویر: یو این آئی

واضح رہے کہ گزشتہ مہینے سے موب لنچنگ کے خلاف تحریک چل رہی ہے اور گزشتہ کل دہلی کے وجے چوک پر اس قانون کے تعلق سے عام لوگوں کو حلف دلایا گیا تھا کہ وہ موب لنچنگ نہیں کریں گے اور نہ اس کا حصہ بنیں گے۔ پولیس ان لوگوں کوحراست میں لے کر پارلیمنٹ تھانے لے گئی تھی اور بعد میں چھوڑ دیا تھا۔ خیال رہے کہ سپریم کورٹ کے سینئر وکلا، سماجی کارکن، ماہر سماجیات، فلم سے وابستہ ہستیوں اور دیگر اہم شخصیات نے اس قانون کا مسودہ تیار کیا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز