بی ایچ یو میں طالبات پر لاٹھی چارج کے بعد کشیدگی برقرار ، وارانسی کے تمام ڈگری کالج اور تعلیم ادارے بند

کاشی ہندو یونیورسٹی (بي ایچ يو) میں تشدد کے واقعات کے بعد پیداشدہ کشیدگی کے پیش نظر کل مہاتما گاندھی کاشی ودیاپیٹھ اور سپورنانند سنسکرت یونیورسٹی اور ان سے منسلک ضلع کے تمام کالج اور تعلیم ادارے بند رہیں گے

Sep 24, 2017 08:24 PM IST | Updated on: Sep 24, 2017 08:24 PM IST

وارانسی: کاشی ہندو یونیورسٹی (بي ایچ يو) میں تشدد کے واقعات کے بعد پیداشدہ کشیدگی کے پیش نظر کل مہاتما گاندھی کاشی ودیاپیٹھ اور سپورنانند سنسکرت یونیورسٹی اور ان سے منسلک ضلع کے تمام کالج اور تعلیم ادارے بند رہیں گے۔

سرکاری ذرائع نے آج کہا کہ ڈویژنل کمشنر نتن رمیش گوکرن نے بی ایچ او کیمپس کا دورہ کیا اور آج کی صورت حال کا جائزہ لیا۔ کمشنر نے وائس چانسلر پروفیسر گریش چندرترپاٹھی اور کچھ تحریک چلانے والے طلباء سے بھی ملاقات کرکے ان کا موقف سمجھا۔ یونیورسٹی کے دورے کے دوران مسٹر گوکرن کے ساتھ یوگیشور رام مشر، سینئر پولیس سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر آر کے بھاردواج سمیت کئی اعلی افسران موجود تھے۔ اعلی افسران کے ساتھ بات چیت کے بعد ضلع مجسٹریٹ مسٹر مشرا نے دونون بڑی یونیورسٹیوں کو بند رکھنے کاحکم جاری کیا۔

بی ایچ یو میں طالبات پر لاٹھی چارج کے بعد کشیدگی برقرار ، وارانسی  کے تمام ڈگری کالج اور تعلیم ادارے بند

دریں اثنا، بی ایچ یو انتظامیہ نے کل شیڈول کے مطابق تین روز قبل دشہرہ کی تعطیل کا اعلان کیا ہے۔انفارمیشن اینڈ پبلک ریلیشنز آفیسر ڈاکٹر راجیش سنگھ نے یونیورسٹی کے ہوسٹل خالی کرائے جانے کی خبروں کو گمراہ کن بتایاہے۔ انہوں نے کہا کہ آج دیر شام تک یونیورسٹی انتظامیہ نے ہاسٹل خالی کرانے سے متعلق کوئی فیصلہ نہیں کیا ہے۔ یونیورسٹی میں ’مڈسیمسٹر بریک‘ 28 ستمبرکے بجائے 25 ستمبر کو شروع ہو گا۔ اس دوران تعلیمی کام ملتوی رہیں گے ۔ انہوں نے واضح کیا کہ یونیورسٹی انتظامیہ نےاس بارے میں آج فیصلہ کیا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز