بین الاقوامی سرحد پر کشیدگی جاری، پاکستانی فائرنگ میں 3 عام شہری اور 2 بی ایس ایف اہلکار زخمی

جموں۔ جموں وکشمیر کے جموں خطہ میں بین الاقوامی سرحد پر تناؤ کی صورتحال ہفتہ کو مسلسل تیسرے دن بھی جاری رہی۔

Sep 23, 2017 06:17 PM IST | Updated on: Sep 23, 2017 06:17 PM IST

جموں۔ جموں وکشمیر کے جموں خطہ میں بین الاقوامی سرحد پر تناؤ کی صورتحال ہفتہ کو مسلسل تیسرے دن بھی جاری رہی۔ سرکاری ذرائع کے مطابق آر ایس پورہ اور رام گڑھ سیکٹر میں گذشتہ رات سرحد پار پاکستان کی طرف سے ایک بار پھر بلااشتعال شدید فائرنگ کی گئی جس کے نتیجے میں 3 عام شہری اور سرحدی حفاظتی فورس (بی ایس ایف) کے 2 جواں زخمی ہوگئے۔ انہوں نے بتایا کہ پاکستانی رینجرز کی جانب سے ہلکے و خودکار ہتھیاروں سے فائرنگ کے علاوہ مارٹر گولے بھی داغے گئے۔ ریاستی پولیس نے اپنے آفیشل ٹویٹر اکاؤنٹ پر ایک ٹویٹ میں کہا ’پاکستان کی جانب سے گذشتہ رات آر ایس پورہ اور رام گڑھ سیکٹروں میں جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کی گئی۔ پاکستانی فائرنگ کے نتیجے میں 3 عام شہری اور بی ایس ایف کے 2 اہلکار زخمی ہوگئے‘۔

دفاعی ذرائع نے بتایا کہ پاکستانی رینجرز نے گذشتہ رات قریب دس بجے آر ایس پورہ اور رام گڑھ سیکٹروں میں شدید گولہ باری کا آغاز کرتے ہوئے بی ایس ایف کی اگلی چوکیوں اور رہائشی علاقوں کو نشانہ بنایا‘۔ انہوں نے بتایا کہ پاکستان کی طرف سے ہلکے و خودکار ہتھیاروں کے علاوہ مارٹر گولوں کا بھی استعمال کیا۔ دفاعی ذرائع نے بتایا کہ سرحد پار سے فائرنگ کا سلسلہ وقفہ وقفہ سے ہفتہ کی صبح تک جاری رہا۔ انہوں نے بتایا کہ بین الاقوامی سرحد کی حفاظت پر مامور فوجی اہلکار سرحد پار سے ہونے والی بلااشتعال فائرنگ کا موثر اور منہ توڑ جواب دے رہے ہیں۔ بی ایس ایف کے ایک ترجمان نے بتایا ’پاکستانی رینجرز نے گذشتہ رات قریب ساڑھے دس بجے ارنیہ سیکٹر میں اچانک بلااشتعال فائرنگ اور مارٹر شیلنگ شروع کی‘۔ انہوں نے بتایا کہ اس کے بعد سانبہ کے رام گڑھ سیکٹر میں بی ایس ایف کی چوکیوں پر فائرنگ کی گئی۔ ترجمان نے بتایا ’پاکستان کی جانب سے 20 سے زیادہ سرحدی چوکیوں کو نشانہ بنایا گیا۔ طرفین کے مابین گولہ باری کا سلسلہ ہفتہ کی صبح پانچ بجے تک جاری رہا‘۔

بین الاقوامی سرحد پر کشیدگی جاری، پاکستانی فائرنگ میں 3 عام شہری اور 2 بی ایس ایف اہلکار زخمی

فائل فوٹو

سرکاری ذرائع نے بتایا کہ بین الاقوامی سرحد پر سرحد پار سے مسلسل گولہ باری کے پیش نظر قریب ایک ہزار سرحدی دیہاتیوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کیا گیا ہے۔ جموں وکشمیر میں پاکستان کے ساتھ لگنے والی سرحدوں پر گذشتہ ڈیڑھ ماہ سے کشیدگی کا ماحول بنا ہوا ہے۔ پاکستان کی طرف سے 22 ستمبر کو ارنیہ، آر ایس پورہ اور رام گڑھ میں جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کی گئی جس کے نتیجے میں میں 4 عام شہری زخمی، 6 مویشی ہلاک جبکہ 34 دیگر زخمی ہوگئے۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز