شعبۂ عربی، جامعہ ملیہ اسلامیہ کے زیر اہتمام عربی زبان وادب پر سہ روزہ ورکشاپ کا افتتاح

نئی دہلی۔ شعبہ عربی جامعہ ملیہ اسلامیہ کی جانب سے نصاب کی اصلاح و ترمیم اور اسے عصری مطالبات سے ہم آہنگ کرنے کے لئے سہ روزہ ورکشاپ کا افتتاحی سیشن آج یکم مارچ بروز بدھ جامعہ ملیہ اسلامیہ کے ٹیگور ہال میں منعقد ہوا۔

Mar 01, 2017 09:43 PM IST | Updated on: Mar 01, 2017 09:43 PM IST

نئی دہلی۔ شعبہ عربی جامعہ ملیہ اسلامیہ کی جانب سے نصاب کی اصلاح و ترمیم اور اسے عصری مطالبات سے ہم آہنگ کرنے کے لئے سہ روزہ ورکشاپ کا افتتاحی سیشن آج یکم مارچ بروز بدھ جامعہ ملیہ اسلامیہ کے ٹیگور ہال میں منعقد ہوا۔ پروگرام کا آغاز شعبۂ عربی کے طالب علم عبد اللہ اے کی تلاوت کلام پاک سے ہوا ، شعبۂ عربی کے صدرپروفیسر محمد ایوب ندوی نے مختلف یونیورسٹیز سے تشریف لائے اساتذۂ کرام کا استقبال کرتے ہوئے شعبۂ عربی جامعہ ملہ اسلامیہ کی تاریخ اور اس شعبہ کی جانب سے جاری کورسز، طلبہ کی تعداد اور نصاب تعلیم کا تعارف کرایا ، انھوں نے ذکر کیا کہ نصاب کی تجدید کاری کے لئے شعبہ عربی جامعہ ملیہ اسلامیہ ہمیشہ سنجیدہ رہا ہے، اس سے پہلے شعبۂ عربی کی جانب سے چار ورک شاپس کا انعقاد کیا جا چکا ہے جس میں نصاب کو جدید ترین خطوط پر استوار کرنے کی کوشش کی گئی ہے۔

اس پروگرام کی صدارت عرب لیگ مشن کے صدر ڈاکٹرمازن المسعودی نے کی ، کلیدی خطبہ پیش کرتے ہوئے فیکلٹی آف ایجوکیشن جامعہ ملیہ اسلامیہ کے ڈین اور معروف ماہر تعلیم پروفیسر الیاس حسین صاحب نے شعبۂ عربی جامعہ ملیہ اسلامیہ کو اس ورکشاپ کے لئے مبارک باد دی ،انھوں نے کہا کہ شعبۂ عربی جامعہ ملیہ اسلامیہ جامعہ کا وہ واحد شعبہ ہے جو نصاب کی اصلاح و ترمیم کے لئے اس قدر سنجیدہ رہتا ہے ،مجھے اس ورکشاپ میں شرکت کرتے ہوئے خوشی ہو رہی ہے ، انھوں نے نصاب کی اصلاح و ترمیم کے لئے ان اساسی نکات کا ذکر کیا جو اس کام کو انجام دیتے ہوئے پیش نظر رہنے چاہیے،انہوں نے نصاب کی تعریف کرتے ہوئے نصاب کے بنیادی اجزاء مثلا نصاب کے مقاصد، نصاب کے مشتملات ، طریقۂ تدریس ، نصابی ارتقاء کے عمل ، اور آراء کی حصولیابی کا ذکرکیا ، اصلاح نصاب کے اصولوں کا ذکر کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ اس میں لچک ہونی چاہے تاکہ اسے زمانے اور حالات سے ہم آہنگ بنایا جاسکے،، نظریات کی عملی تطبیق ہونی چاہیے، ملازمتوں کے امکانات، معاشرہ سے اس کے ربط اور اقدارکی نشونما کسی بھی نصاب کی کامیابی کی ضمانت ہوتے ہیں ۔انھوں نے مزید کہا کہ نصاب سازی میں طالب علم کے جسمانی ، سماجی، اقتصادی ، جذباتی، اور ذہنی ارتقاء کا خیال رکھا جانا چاہئے، سماجی پہلو سے نصاب کا جائزہ لیتے ہوئے انھوں نے کہا کہ اس میں حکومت کی دلچسپی ، قانونی اختیارات، ملازمتی اسباب، اور سماجی مفادات اہم کردار ادا کرتے ہیں، اقتصادی اور ماحولیاتی اعتبارا ت کا ذکر کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ ہمیں نصاب سازی میں حکومت کے بجٹ، والدین کی آمدنی، اداروں کی استطاعت ، اور سماج کی ضروریات کو ملحو ظ خاطر رکھانا چاہیے، اسی طرح ماحولیاتی اعتبارات کا ذکر کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ طلبہ کی غذا ، فطری ماحول اور شہری ترقیات کا خیال رکھا جانا چاہیے۔

شعبۂ عربی، جامعہ ملیہ اسلامیہ کے زیر اہتمام عربی زبان وادب پر سہ روزہ ورکشاپ کا افتتاح

پروگرام کے صدرڈاکٹر مازن المسعودی نے ورکشاپ کے انعقاد پرشعبۂ عربی کو مبارک باد دی اور ہندوستان میں عربی زبان کی ترقی پر خوشی کا اظہار کیا ، انھوں نے عرب و ہند کے قدیم تعلقات کا ذکر کیا اور ہندوستان کے علماء و ادباء کے کارناموں کو سراہا ۔افتتاحی سیشن کے اختتام پر ورکشاپ کے کوآرڈینیٹر ڈاکٹر فوزان احمد صاحب نے تمام مہمانوں کا شکریہ ادا کیا اور ان کی آمد کو پروگرام کی کامیابی کی ضمانت قراردیا اور امید ظاہر کی کہ اس پروگرام کے بہتر نتائج سامنے آئیں گے۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز