تین طلاق کے خلاف قانون کا مسودہ تیار ، تین سال کی سزا اور جرمانہ کا بندوبست ، متاثرہ کو معاوضہ کی بھی تجویز

Dec 01, 2017 07:32 PM IST | Updated on: Dec 01, 2017 07:32 PM IST

نئی دہلی : سپریم کورٹ کے ذریعہ تین طلاق کو غیر قانونی قرار دئے جانے کے بعد اب مودی حکومت نے تین طلاق پر پابندی سے متعلق بل کا مسودہ تیار کرلیا ہے اور اس کو سرمائی اجلاس میں پیش کئے جانے کا امکان ہے۔ذرائع کے مطابق سرکار کی جانب سے تشکیل دی گئی کمیٹی نے مسودہ کو حتمی شکل دینے کیلئے سبھی ریاستوں سے ان کا مشورہ طلب کیا ہے ۔ اس قانون کا نام مسلم وومین پروٹیکشن آف رائٹس لا دیا گیا ہے ۔

مسودہ کے مطابق نئے بل میں تین طلاق کو ناقابل ضمانتی جرم قرار دیا گیا ہے اور قصور وار پائے جانے پر تین سال کی قید ہوگی ۔ علاوہ ازیں جرمانہ کا بھی بندوبست کیا گیا ہے ۔ مسوہ کی خاص بات یہ ہے کہ متاثرہ خاتون کو معاوضہ دینے کا بھی بندوبست ہے۔

تین طلاق کے خلاف قانون کا مسودہ تیار ، تین سال کی سزا اور جرمانہ کا بندوبست ، متاثرہ کو معاوضہ کی بھی تجویز

file photo

اطلاعات کے مطابق مرکزی حکومت نے بل تیار کرنے کی ذمہ داری راجناتھ سنگھ ، ارون جیٹلی ، سشما سوراج ، روی شنکر پرساد اور جتیندر سنگھ کو دی تھی ۔ ذرائع کے مطابق بل کا ڈرافٹ تیار کرلیا گیا ہے اور سبھی ریاستوں کو اس ڈرافٹ پر اپنی رائے دینے کیلئے کہا گیا ہے۔ تاہم یہ قانون جموں و کشمیر پر نافذ نہیں ہوگا۔

قابل ذکر ہے کہ 22 اگست کو تین طلاق معاملہ میں سپریم کورٹ کے پانچ ججوں کی بنچ نے اپنا فیصلہ سناتے ہوئے چھ ماہ تک کیلئے اس پر روک لگا دی تھی اور مرکزی حکومت کو حکم دیا تھا کہ وہ چھ ماہ میں پارلیمنٹ میں قانون بنا کر تین طلاق کو غیر آئینی قرار دے۔سپریم کورٹ کے اسی حکم کے بعد مرکزی حکومت تین طلاق پر پابندی کیلئے قانون سازی کررہی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز