تین طلاق معاملہ: سلمان خورشید کو غیر جانبدارانہ رائے پیش کرنے کی اجازت

نئی دہلی۔ سپریم کورٹ نے تین طلاق، تعدد ازدواج اور حلالہ کے معاملے میں مدعا علیہ بنانے اور فن کے ماہر کے طور پر تسلیم کرنے سے متعلق سینئر وکیل اور سابق وزیر قانون سلمان خورشید کی درخواست آج قبول کر لی۔

May 03, 2017 01:38 PM IST | Updated on: May 03, 2017 01:38 PM IST

نئی دہلی۔ سپریم کورٹ نے تین طلاق، تعدد ازدواج اور حلالہ کے معاملے میں مدعا علیہ بنانے اور فن کے ماہر کے طور پر تسلیم کرنے سے متعلق سینئر وکیل اور سابق وزیر قانون سلمان خورشید کی درخواست آج قبول کر لی۔ مسٹر خورشید نے چیف جسٹس جگدیش سنگھ کیہر کی صدارت والی بنچ کے سامنے اس معاملے کا خاص طور سے ذکر کرتے ہوئے کہا کہ وہ مسلمانوں میں تین طلاق، تعدد ازدواج اور نکاح حلالہ کے معاملوں میں غیر جانبدارانہ خیالات پیش کرنا چاہتے ہیں اور عدالت سے انہیں اس کے لئے اجازت چاہئے۔

ان کی عرضی پر عدالت عظمی نے کہا کہ اس معاملے میں تحریری طور پر مواد داخل کرنے کی میعاد ختم ہو چکی ہے۔ مسٹر خورشید نے عدالت سے صرف دو دن دینے کی درخواست کی اور کہا کہ وہ اس طے شدہ وقت کے اندر اندر ہی اپنا موقف تحریری طور پرپیش کر دیں گے۔ عدالت نے ان کی درخواست قبول کر لی۔  واضح رہے کہ اس معاملے کی پانچ رکنی آئینی بنچ 11 مئی سے باقاعدہ سماعت کرے گی۔

تین طلاق معاملہ: سلمان خورشید کو غیر جانبدارانہ رائے پیش کرنے کی اجازت

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز