اترپردیش : تین طلاق دینے پر پنچایت نے لگایا 2 لاکھ روپے کا جرمانہ، جہیز لوٹانے کا بھی فرمان

Jun 12, 2017 10:30 PM IST | Updated on: Jun 12, 2017 10:30 PM IST

سنبھل : تین طلاق پر جاری ملک گیر بحث کے درمیان یوپی کے سنبھل میں ایک پنچایت نے بڑا فیصلہ سنایا ہے۔ پنچایت نے بیوی کو تین طلاق دینے والے ایک شخص پر 2 لاکھ کا جرمانہ عائد کیا ہے اور ساتھ ہی ساتھ اسے اپنی بیوی کو مہر کے طور پر 60 ہزار روپے دینے کا بھی فرمان سنایا ہے۔

مغربی یوپی کے سنبھل میں ترک برادری کی پنچایت نے اتوار کو یہ فرمان سنایا ۔ علاقہ کے 52 گاؤں کے لوگوں نے ایک مدرسے میں پنچایت کا انعقاد کیا تھا۔بتایا جاتا ہے کہ 45 سال کے ایک شخص کی شادی تقریبا 10 دن پہلے ہی 22 سال کی لڑکی کے ساتھ ہوئی تھی۔ شادی کے فورا بعد دونوں کے درمیان ان بن ہو گئی۔ اس کے بعد شوہر نے تین طلاق دے کر بیوی کو میکے بھیج دیا۔

اترپردیش : تین طلاق دینے پر پنچایت نے لگایا 2 لاکھ روپے کا جرمانہ، جہیز لوٹانے کا بھی فرمان

file photo

بیٹی کو طلاق ملنے کے بعد لڑکی کے گھر والوں نے پنچایت میں اس کی شکایت کی۔ متاثرہ خاندان کی شکایت پر پنچایت نے برادری کے 52 دیہات سے لوگوں کو جمع کیا اور ملزم شخص پر دو لاکھ کا جرمانہ لگانے کا فیصلہ سنایا ۔ ساتھ ہی ساتھ اسے 60 ہزار کی مہر کی رقم بھی لڑکی کو دینے کا فرمان سنایا ۔ علاوہ ازیں  پنچایت نے جہیز میں ملی اشیاء بھی لڑکی کے گھر والوں کو لوٹانے کا حکم دیا۔

خیال رہے کہ ملک بھر میں تین طلاق پر چل رہی بحث کے درمیان علاقہ کی ترک برادری نے ایک ساتھ تین طلاق دینے پر پابندی لگادی تھی اور ساتھ ہی ساتھ برادری نے شادیوں میں زیادہ جہیز کے مطالبہ پر بھی پابندی لگا دی تھی اور خلاف ورزی پر جرمانہ کا اعلان کیا تھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز